چیف جسٹس کا شریف میڈیکل سٹی کے دورے کا مقصد ہم پر ہاتھ ڈالنا تھا، نوازشریف

loading...

چیف جسٹس کا شریف میڈیکل سٹی کے دورے کا مقصد ہم پر ہاتھ ڈالنا تھا، نوازشریف
اسلام آباد: نواز شریف کا کہنا ہے مقننہ کا رول دوسروں کے ہاتھ میں چلا گیا، وزیراعظم اور چیف جسٹس کی ملاقات سے متعلق کچھ نہیں کہہ سکتا، چیف جسٹس کے ہسپتالوں کے دوروں کا ٹارگٹ ہم تھے، شریف میڈیکل سٹی کے دورہ کا مقصد ہم پر ہاتھ ڈالنا تھا۔سابق وزیراعظم نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا 18 لاکھ زیر التوا مقدمات کا بھی کچھ کریں، سائلین دیکھتے ہیں کب ان کو انصاف ملے گا، جو آپ کا کام نہیں اس طرف نہ جائیں۔ انہوں نے کہا اپنا نظریہ برملا بتا دیا ہے، پولیٹیکل پارٹی ایکٹ کوختم کر کے مجھے پارٹی صدارت سے ہٹایا گیا، چیف جسٹس کو جو کام نہیں کرنا چاہیئے وہ نہیں کرنا چاہیئے۔نواز شریف نے کہا واجد ضیا نے ہمیں سرخروکیا ہے، آج گواہ کے ذریعے جو حقائق سامنے آئے، وہ سب نے دیکھ لیے، بھاگنے والا نہیں، نہ ایسا کبھی سوچا، اس بار کسی اور کو ملک سے باہر جانا چاہیئے۔ ان کا کہنا تھا گواہ کے ایک ایک بیان نے ہمارے خلاف الزامات کو دھو دیا، یہ مقدمہ بدعنوانی کا نہیں، سیاسی بھی نہیں بلکہ فراڈ ہے، یہ فراڈ میرے اور میری فیملی کے ساتھ ہو رہا ہے۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا ثابت ہو گیا جو کچھ ہو رہا ہے سیاسی ہے، میری اہلیہ بیمار ہیں، مجھے تو وہیں رہنا چاہیئے تھا، مجھے اہلیہ کی تیمارداری کے لیے نہیں جانے دیا جا رہا، آج ایک ایک کر کے حقیقت سامنے آئی۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں