لوٹ مار کرنیوالے سیاستدانوں کیلئے اب پارلیمنٹ میں کوئی جگہ نہیں، عوام انہیں اڈیالہ جیل میں دیکھنا چاہتی ہے،سراج الحق

سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی اس ملک میں شریعت کا نٖفاذ چاہتی ہے اس ملک کے تمام مسائل کا حل اب شریعت کا نفاذ ہے،شریعت کے نفاذ میں اس قوم و ملک کی بھلائی ہے

نواز شریف کوتیس سال حکومت میں رہنے کے بعد اب عدالتوں میں انصاف کا خیال آیا ہے اور کہ رہے کہ عدالتوں میں انصاف نہیں تو ہم پوچھنے میں حق بجانب ہیں کہ اگر عدالتوں میں انصاف نہیں ،تعلیمی اداروں میں انصاف نہیں،اگرہسپتالوں میں علاج نہیں ہے اور عوام مسائل و مشکلات سے دوچار ہیں تو اسکی ذمہ دار ی کس پر عائد ہے،عوام کے ساتھ بار بار فراڈ کرنے والے حکمران اب عوام کو نئے جال میں نہیں پھنسا سکیں گے۔

میری لڑائی کسی فرد کے ساتھ نہیں ہے لڑائی عوام کو دھوکہ دینے والوں سے ہے۔ جماعت اسلامی نے ملک میں کرپشن کے خاتمے اور عدل و انصاف کیلئے لازوال جدوجہد کی ہے جو تاریخ کا ایک حصہ ہے،اس جدوجہد کے نتیجے میں اب وقت آیا ہے کہ عوام جماعت اسلامی میں شامل ہو رہے ہیں۔

 دیر میں جماعت اسلامی میں نئی شمولیتیں پورے ملک میں اسلامی انقلاب اور عدل و انصاف کی نوید ہیں ،ان خیالات کااظہار سراج الحق نے اپنے حلقہ انتخاب دیر پائین کے علاقہ سنگپارہ میں ایک بڑے شمولیتی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

loading...

سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی اس ملک میں شریعت کا نٖفاذ چاہتی ہے اس ملک کے تمام مسائل کا حل اب شریعت کا نفاذ ہے،شریعت کے نفاذ میں اس قوم و ملک کی بھلائی ہے ۔
سراج الحق نے کہاکہ حکومت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے پاکستانی ڈاکٹرز ، انجینئرز ، سائنسدان اور ماہر ین تعلیم پاکستان سے امریکہ اور برطانیہ جیسے ممالک میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوا رہے ہیں جبکہ ملک میں ان عظیم لوگوں کی کوئی قدر نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ملک کو ایسے انقلابی ڈاکٹرز اور انجینئرز کی ضرورت ہے ، جو سٹیٹس کو کے خلاف ڈٹ جائیں اور موجودہ فاسد اور لوٹ کھسوٹ کے ظالمانہ نظام کی بجائے قرآن و سنت کے عادلانہ نظام کے غلبہ کے لیے عوام میں شعوربیدار کریں ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کو کسی ان پڑھ نے نہیں ، بلکہ بیرون ملک سے اعلیٰ تعلیم کی ڈگریاں لینے والوں نے لوٹاہے ۔ کرپشن میں جتنے لوگ ملوث ہیں ، سب نامور بیرونی یونیورسٹیوں سے پڑھے ہوئے ہیں ۔

کرپٹ سیاسی برہمنوں اور پنڈتوں سے ملک و قوم کو نجات دلانا ہمارے نزدیک اللہ کی رضا کا بہترین ذریعہ ہے ۔انہوں نے کہاکہ سیکولر و لبرل ازم کے پجاری دین کا مذاق اڑانے سے بھی باز نہیں آتے

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں