کوہاٹ: چیف جسٹس نے میڈیکل کی طلبہ کے قتل کا از خود نوٹس لے لیا

کو ہاٹ میں میڈیکل کی طلبہ

28 جنوری کو کوہاٹ میں میڈیکل کی طالبہ عاصمہ رانی کو رشتہ نہ دینے پر مجاہد اللہ آفریدی نامی شخص نے فائرنگ کا نشانہ بنایا تھا۔ جس کے بعد ملزم سعودی عرب فرار ہو گیا تھا۔

28 جنوری کو کو ہاٹ میں میڈیکل کی طلبہ کو اس کے گھر کے سامنے گولیاں ماری گئیں تھیں۔  میڈیکل کی طابلہ عاصمہ کو ہسپتا لے جایا گیا۔ جہاں وہ زخموں کو تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئی تھی۔ تاہم مقتولہ نے جاں بحق ہونے سے پہلے اپنے کا قاتل کے نام بتا دیا تھا۔  لیکن ملزم قتل کے بعد سعودی عرب فرار ہو گیا تھا۔

تاہم اب چیف جسٹس سپریم کورٹ نے قتل کا از خود نوٹس لے لیا ہے۔ اور آئی جی خیبرپختون خواہ کو 24 گھنٹوں میں رپورٹ پیش کرنے کا کہا ہے۔

یاد رہے کہ مقتولہ میڈٰیکل تھرڈ ائیر کی طالبہ تھی۔ جسے رشتے سے انکار پر گولیاں ماری گئیں۔ ملزم گولیاں مارنے کے بعد سعدی عرب فرار ہوگیا تھا۔ تاہم ڈی پی او کوہاٹ کے مطابق عاصمہ کے قتل میں نامزد ملزم صدیق آفریدی کو گرفتار کرلیا ہے جو مرکزی ملزم مجاہد گل آفریدی کا بھائی ہے جب کہ بیرون ملک فرار مرکزی ملزم کی گرفتاری کے لیے انٹرپول سے رابطہ کیا جارہا ہے

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  کاجول کی فلم ’’ایلا ‘‘رواں سال 14ستمبر کو ریلیزکی جائے گی

اپنا تبصرہ بھیجیں