ہیجڑا کیسے پیدا ہوتا ہے ؟

اس زمین پر مرد اور عورت کے علاوہ ایک تیسری جنس بھی ہے جسے عام طور پر کھسرا، زنانہ، ہیجڑا اور خواجہ سرا کے نام سے جانا جاتا ہے۔ آپ نے انہیں اکثر شادی بیاہ، میلوں ٹھیلوں میں ناچتے گاتے دیکھا ہوگا۔ یہ بعض شہروں میں ٹریفک سگنل پر بھیک مانگتے ہوئے بھی نظر آتے ہیں۔

سوائے خواجہ سرا کے ان کو دیے گئے تمام ناموں میں حقارت کی آمیزش نظر آتی ہے۔ مغلیہ دور میں ان کی بہت عزت کی جاتی تھی مگر لیکن وقت کے ساتھ ساتھ یہ گلی گلی ناچنے والے اور حقارت کا مجسمہ بن کر رہ گئے۔ سوال یہ ہے کہ یہ ہیجڑے پیدا کیسے ہوتے ہیں ؟ ایسی کیا وجوہات ہیں جن کی وجہ سے ان کی پیدائش ہوتی ہے۔

Photo: File

جہاں تک بائیولوجیکل فارمیشن کا تعلق ہے تو عورت ایک ایکس اور مرد ایکس وائی کروموسومز پیدا کرتے ہیں۔ جب مرد کا X کروموسومز عورت کے X کروموسومز کے ساتھ مل جائے یعنی ڈبل Y بن جائے تو لڑکی پیدا ہوتی ہے اور اگر مرد کا Y کروموسوم عورت کے ایکس کروموسومز کے ساتھ مل جائے تو لڑکا پیدا ہوتا ہے۔

پاکستان کے مشہور ٹک ٹاک ماڈلز !

loading...

اگر اس مرحلے میں کچھ عدم توازن ہوجائے تب ہیجڑا پیدا ہوتا ہے۔ یہ بات جان لینا انتہائی ضروری ہے کہ نہ تو ہیجڑے کوئی الگ مخلوق ہے اور نہ ہی کوئی الگ قوم ہیں وہ انسان ہی ہیں۔

ان میں سے بعض مردان اوصاف سے اور بعض زنانہ اوصاف سے محروم ہوتے ہیں۔ یہ ان کی تخلیق کا وہ رخ ہے جو ان کے خالق اور پروردگار نے ان میں ایسے ہی رکھا ہے۔ یہ ہیجڑے یا خواجہ سرا آج ہی کی دنیا میں پیدا نہیں ہوئے بلکہ نبی اکرم کے دور میں بھی خواجہ سرا پیدا ہوتے تھے۔

ہیجڑا
Photo: File

حضرت علی جن کا علم حکمت میں کوئی ثانی نہیں تھا ان سے دریافت کیا گیا کہ ہیجڑے کی وراثت کا مسئلہ کیا ہے؟ تو آپ نے فوراً جواب دیا ہیجڑے کی وراثت کا تعین اس کی مشابہت کی بنا پر کیا جائے گا۔ اگر وہ مرد کے مشابہ ہیں تو مرد کا حصہ پائے گا اور اگر اس کی جسامت عورت کے مشابہ ہیں تو سے عورت کا حصہ ملے گا۔

اس سے ایک چیز تو یہ معلوم ہوتی ہے کہ اسلام میں والدین اور دیگر کی جائیداد نہیں جڑے کا حصہ موجود ہے اور یہ بھی معلوم ہوگیا کہ کتنا لیکن افسوس سے ہے کہ ہمارے معاشرے میں ان بیچاروں کو کچھ نہیں ملتا جو کہ سراسر ناانصافی ہے اور اسلامی تعلیمات کی خلاف ورزی ہے ۔

(Visited 10,405 times, 6 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں