پاکستانی سیاست دانوں کی رسہ کشی

سیاست دانوں

رسہ کشی ایک دیہاتی فن ہے جس کے لئے فنکار ہونا ضروری ہے۔رسہ کشی کا مفہوم اور مطلب جاننا ہو تو کسی پہلوان کے پاس جانا ہوگا اور اگر سیاسی رسہ کشی کی پہچان کرنی ہو تو پاکستان کی سیروسیاحت ضروری یعنی سیاست کی سیروسیاحت ضروری اور فرض ہے۔

پاکستان کے علاوہ دیگر ممالک میں رسہ کشی کا عمل جاری وساری ہے۔رسہ کشی پہلوانوں کے اکھاڑے میں ہونا لازمی نہیں بلکہ رسہ کشی پارلیمنٹ ،سینٹ اور الیکشن میں بھی باضابطہ ہوتی ہے نوازشریف،شہباز شریف ،زرداری اور دیگر سیاست دانوں نے باقاعدہ اس کی تربیت حاصل کر لی ہے اور عرصہ سے رسہ کشی کرنے بیرونِ ممالک کی سیر بھی کرتے ہیں۔رسہ کشی خود کشی کا مترادف ہے کیونکہ خودی کشی کرنے کے لیے بااثر طریقہ جاننا اہم نہیں ورنہ خود کشی میں ناکامی سے سیاسی رسہ کشی کرنی پڑتی ہے۔

پی ٹی آئی حکومت کو ایسے رسے کی ضرورت ہے جس سے داؤ پیچ کی خوشبو موجود ہو سیاست میں داخل ہونے کے لیے رسہ کشی اور دوا کشی کی ٹرینیگ لانا چاہیے اب سیاست میں سیاسی اُتار چڑھاؤ کے لیے رسوں اور رسیوں کی مدددرکار ہوتی ہے۔حکومتوں کی تبدیلی اور سیاسی پارٹیوں کو بھی ایسے عمل کی حکمت اختیار کرنا پڑتی ہے۔سیاست دان کیوں سیات دان ہوتے ہیں کیونکہ ان میں سیاست نہیں ہوتی بلکہ سیاست کی ماردھاڑ ہوتی ہے۔کہتے ہیں کہ گھر کا بھیدی لنکا ڈھائے یہ محاورا عام استعمال ہوتا ہے لیکن اب تو اپنے ہی بھیدی لنکا ڈھارہے ہیں۔پاکستان میں تعلیم کے حوالہ سے سپریم کورٹ نے اہم فیصلہ کیا ہے اور غریب کی تعلیم کو اس کی پہنچ سے دور نہیں بلکہ نزدیک کر دیا ہے اور پرائیویٹ سکول سسٹم کی بدعنوانیوں اور زیادتیوں کا سدِ باب اس انداز میں کیا ہے کہ اب فیسوں کے معاملہ میں ان کی بدمعاشیاں جو عرصہ سے چل رہی تھی اور ایک مافیا حکومت کی بھی نہیں چلنے دے رہا تھا۔

مزید پڑھیں: ملکی سیاست کا بگڑتا توازن

اب یہ سکنجے میں آگئے ہیں اور تعلیم کی حالت بھی سدھرے گی اور غریب کی حالت بھی بہتر ہو گی۔بات کر رہے تھے سیاست دانوں کی تو سیاست کی بہت سی اقسام ہیں جن کا جاننا عوام کے لیے بے حد ضروری ہے ان کی اقسام الیکشن کے ایام میں سامنے آ جاتی ہیں۔جس طرح آم کی قسمیں اور آم کھانے والوں کی قسمیں بیشمار اور لاتعداد ہیں اسی طرح سیاست بھی موسم کے مطابق اپنی قسمیں تبدیل اور قسمیں تبدیل کرتے ہیں۔ہمیں تو سیاست دانوں اور سیاست سے کوئی اختلاف نہیں بلکہ عوام اختلافات رکھتے ہیں۔اور اختلافات بھی کرتے ہیں۔ملک کی قسمت کو تبدیل کرنا ہے تو سیاست دانوں کی اقسام میں پارلیمنٹ کے ذریعے تبدیلی کرنا ہو گی پھر ملک کی قسمت بھی بدلے گی اور سیاست دانوں کی اقسام بھی اور اندازو بیاں میں بھی نمایاں فرق نظر آئے گا۔سیاست کے لیے عقل مند ہونا ضروری ہے۔بلکہ عقل کے لیے سیاسی ہونا ضروری ہے سیاست کی پولیٹیکل سائنس کی اصطلاع میں بھی بہت سی اقسام دیکھنے کو ملتی ہیں۔

loading...

لیکن عوام کا اس سے متفق ہونا ضروری نہیں سیاست دانوں کی خصوصیات اور خوبیوں سے عوام تنگ ہیں۔ لیکن سیاست دان اس تنگ نظری کو نظر انداز کرتے ہیں۔پاکستان کی سیاست میں اور دنیا کی دیگر سیاست میں فرق نمایاں ہے۔سیاست کے ساتھ لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ بھی بہت اہم ہے جس میں پندرہ سال سے کم عمر بچوں کی ملازمت پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔جس سے گھریلو ملازمین بچوں پر تشدد کے واقعات کم ہوں گے اور جبری مشقت میں بھی کمی آئے گی گھریلو معصوم ملازمیت بچوں سے کام لینا نہ صرف اخلاقی بلکہ قانون کی بھی خلاف ورزی ہے خلاف ورزی۔ کسی بھی قسم کی ہو اس کا حکومت کو سدِ باب بروقت کرنا چاہیے۔

سیاست کا مفہوم معلوم کرنا ہو تو کسی سیاست دان سے پوچھنے کی ضرورت نہیں اور نہ ہی کوئی ڈکشنری کنسلٹ کرنا ضروری ہے بلکہ کسی اندراج شدہ ووٹر سے رابطہ کر لینا چاہیے۔سیاسیات پڑھنا اسی لیے ضروری نہیں کیونکہ اَن پڑھ بھی سیاست دانوں کو خوب سے خوب تر جانتے بوجھتے ہوئے ووٹ کاسٹ کر دیتے ہیں جیسے ڈراموں میں اداکاروں کو کاسٹ کیا جاتا ہے۔پاکستان میں سیاسی نظام میں شکست وریخت کا عمل جاری رہنے کی وجہ بھی سیاست دانوں سے پوچھ لیناچاہیے البتہ وزراء اور وزیراعظم پاکستان کا اصل سیاست دان ہونا ضروری ہے کیونکہ کہ ان کے پاس باقائدہ لائسنس ہوتا ہے اور وہ لائسنس کو استعمال بھی کرتے ہیں بات ہو رہی تھی گھر کا بھیدی لنکا ڈھائے ۔ البتہ دیکھیں لنکا اور سری لنکا کا کیا ہوتا ہے۔سری لنکا میں سیاست کی تعریف تلاش کی جا رہی ہے۔پاکستان میں پی۔پی۔پی اور پی ٹی آئی میں ٹی آئی کا فرق ملتا ہے۔پی مشترکہ ہے لیکن ٹی آئی اب کیا کرتی ہے۔اور اسے آئیندہ کیا کرنا چاہیے یہ تو عمران خان ہی بتا سکتے ہیں۔البتہ ہمیں گھر کے بھیدی کا گھر تلاش کرنے کی ضرورت ہے۔ورنہ سیاست اور سیاست دانوں کی تعریف معلوم کرنے کے لیے بیرونِ ملک سے رابطہ کرنا پڑے گا یا شیخ رشید کی خدمات طلب یا درکار ہوں گی۔

سید عارف نوناری
چیئرنگ کراس

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں