کشمیر میں ظلم کے خلاف آواز اٹھائے کے لیے شوبز شخصیات میدان میں آ گئیں

کشمیر

لاہور: مقبوضہ کشمیر میں ظلم اور وادی کا خصوصی درجہ ختم کیے جانے کے بعد شوبز شخصیات بھی میدان میں آ گئیں۔

بھارتی فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری کشمیریوں کے حقوق کے لیے آواز اٹھائے۔ جنت نظیر وادی جل رہی ہے اور دنیا خاموش ہے۔

ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے اداکارہ ماروا حسین کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم کے بعد عالمی ادارے کہاں ہیں، انسانیت کو بچایا جائے۔ کیا آج بھی ہم کسی تاریک دور میں رہتے ہیں۔ دعائیں کشمیریوں بھائیوں کیساتھ ہیں انہیں بچایا جائے۔

ایک اور ٹویٹ میں ان کا کہنا تھا کہ کشمیر میں ہونے والے ظالم کے بعد ساری رات سو نہیں پائی۔ دنیا کیوں خاموش ہے اور کردار ادا کیوں نہیں کر رہی، کیا انسانیت سے زیادہ طاقت معنی رکھتی ہے۔ اللہ ہم سب کی مدد کرے۔

بھارت کے بارے میں واضح اور دوٹوک مؤقف رکھنے والے شان شاہد نے ٹویٹ میں گنگا اشنان کرتے ہوئے نریندر مودی کی تصویر لگائی اور تبصرہ کیا: گنگا نہانے سے کشمیری شہیدوں کا لہو نہیں دُھلے گا۔

حمزہ علی عباسی کا کہنا تھا کہ تمام پاکستانی فنکاروں سے، بالخصوص اُن پاکستانی فنکاروں سے جو سوشل میڈیا پر زیادہ فین فالوئنگ رکھتے ہیں، سے درخواست کرتا ہوں کشمیریوں کے حقوق کے لیے آواز اٹھائیں۔

ان کا ایک اور ٹویٹ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ دیانتداری کے ساتھ خود سے پوچھیے کہ آپ کشمیر کےلیے آواز کیوں نہیں اٹھاتے؟ کیا آپ یہ سمجھتے ہیں کہ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا؟ یا یہ سمجھتے ہیں کہ آپ اس بارے میں ذہن بنانے یا کوئی رائے دینے کےلیے مناسب حقائق سے باخبر نہیں؟ یا آپ اس لیے کچھ کرنا نہیں چاہتے کیونکہ اس سے ہندوستان میں آپ کے مداحوں پر یا مستقبل میں وہاں آپ کے ممکنہ کام پر اثر پڑے گا؟

ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر آپ اپنے دل میں احساس رکھتے ہیں کہ ہمارے پڑوس میں بڑے پیمانے پر ظلم ہورہا ہے اور آپ کو اس پر آواز اٹھانی چاہیے (کم سے کم اتنا تو ہم کر ہی سکتے ہیں) لیکن پھر بھی آپ خاموش رہتے ہیں، تو یاد رکھیے کہ یہ ساری فین فالوئنگ ہی آپ کی سب سے بڑی آزمائش بن جائے گی اور آپ اپنی اس خاموشی کےلیے اپنے ربّ کے سامنے جوابدہ ہوں گے۔

اداکارہ مہوش حیات نے بھارتی فوج کی جانب سے پاکستانی شہریوں پر کلسٹر بم برسانے کی مذمت کرتے ہوئے اسے جنیوا کنونشن کی خلاف ورزی قرار دیا جس کا کوئی جواز پیش نہیں کیا جاسکتا۔ یہ صرف جنگی جرائم ہیں۔ دنیا کو جاگنا ہوگا اور ان مظالم کو رکوانا ہوگا۔

وینا ملک نے لکھا کہ بھارتی فوجیں بدترین مظالم سے بھی کشمیریوں کو ان کے حقِ خودارادیت سے روک نہیں رکھ سکتیں۔ آزادی، کشمیری عوام کا بنیادی حق ہے اور طاقت کے استعمال سے کوئی انہیں ان کے حق سے محروم نہیں کرسکتا۔

(Visited 8 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں