ہزاروں خواتین اپنے پیاروں کے ہاتھوں ہلاک،عالمی ادارے کی رپورٹ میں انکشاف

خواتین

ویانا : عالمی ادارے کی خواتین سے متعلق رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 2017 میں پرتشدد کارروائیوں یا جرائم کے نتیجے میں ہلاک ہونے والی خواتین کی تعداد 87000 تھی۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے برائے انسداد منشیات و جرائم یو این او ڈی سی نے دعویٰ کیا ہے کہ صرف ایک سال کے دوران دنیا میں 50 ہزار خواتین کو ان کے خاوندوں، بھائیوں، والدین، پارٹنرز یا اہل خانہ نے ہی قتل کردیا۔

یو این او ڈی سی کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں بتایا گیا کہ 2017 میں پُرتشدد کارروائیوں یا جرائم کے نتیجے میں ہلاک ہونے والی خواتین کی تعداد 87000 تھی۔

آسٹریا کے دارالحکومت ویانا سے جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا کہ متعدد ایسے واقعات رپورٹ ہوئے ہیں کہ قتل سے قبل خواتین تسلسل کے ساتھ اپنوں کے ہاتھوں ہی پُرتشدد کارروائیوں کا نشانہ بنتی رہی تھیں۔اور آخر کار جان سے ہاتھ دھو بیٹھیں،

loading...

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ خواتین کے قتل کی ایک وجہ حسد اور طویل گھریلو جھگڑے بھی تھے جب کہ کئی واقعات میں جان سے مارنے کی وجہ خوف بھی سامنے آئی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارےکے مطابق رپورٹ میں درج اعداد و شمار کے مطابق براعظم ایشیا سے تعلق رکھنے والے ممالک میں یہ تعداد 20 ہزار تھی جب کہ افریقہ میں 19 ہزار، امریکا میں آٹھ ہزار اور مغربی ممالک میں تین ہزار تھی۔

ویانا سے جاری کردہ رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ اگر آبادی کے اعتبار سے دیکھا جائے تو براعظم افریقہ خواتین کے لیے سب سے زیادہ خطرناک ثابت ہوا ہے۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں