بھارت مقبوضہ کشمیر میں ریاستی جبر کا ہتھکنڈا استعمال کررہا ہے، آرمی چیف

پاک فوج کے سپہ سالار جنرل قمر جاوید باجوہ نے عید الاضحیٰ لائن آف کنٹرول پر فوجی جوانوں کے ساتھ منائی۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری بیان کے مطابق آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے کنٹرول لائن کا دورہ کیا اور باغ سیکٹر میں فوجی جوانوں کے ساتھ عید منائی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے پیغام میں کہا کہ ‘ہم کشمیری بہن بھائیوں کے ساتھ کھڑے ہیں، حکومت نے مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے کوششوں کا آغاز کردیا، بھارت مقبوضہ کشمیر کے تنازع سے دنیا کی توجہ ہٹانا چاہتا ہے۔

آرمی چیف نے مزید کہا کہ حکومت نے کشمیر کے معاملے پر کثیرالجہتی کاوشیں کی ہیں، امن کی خواہش کے ساتھ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے پرعزم ہیں۔

جنرل باجوہ نے خبردار کیا کہ بھارت، مسئلہ کشمیر پر دنیا کو گمراہ کرنے کیلئے کچھ بھی کر سکتا ہے، بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں کیے سنگین جرائم کی پردہ پوشی نہیں کرنے دیں گے۔

آرمی چیف نے کہا کہ ہمارا مذہب ہمیں امن کا درس دیتا ہے تاہم سچ کیلئے استقامت اور قربانی بھی سکھاتا ہے، ہم اپنے کشمیری بہن، بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں، جتنا وقت، جتنی کاوشیں درکار ہوں کریں گے، انشاء اللہ ہر چیلنج پر پورا اتریں گے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت دنیا کی توجہ مقبوضہ جموں و کشمیر سے ہٹا کر ایل او سی اور پاکستان پر مرکوز کرانا چاہتا ہے، پاک فوج عیدِ قرباں جموں و کشمیر کے باسیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور پر منا رہی ہے۔

مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال کا پس منظر
بھارت نے 5 اگست کو راجیہ سبھا میں کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا بل پیش کرنے سے قبل ہی صدارتی حکم نامے کے ذریعے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کردی تھی اور ساتھ ساتھ مقبوضہ کشمیر کو وفاق کے زیرِ انتظام دو حصوں یعنی (UNION TERRITORIES) میں تقسیم کردیا تھا جس کے تحت پہلا حصہ لداخ جبکہ دوسرا جموں اور کشمیر پر مشتمل ہوگا۔

loading...

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں