نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا معاملہ، کابینہ کی ذیلی کمیٹی آج فیصلہ سنائے گی

نواز شریف
Loading...

اسلام آباد: سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے یا نہ نکالنے سے متعلق فیصلے کے بارے میں وفاقی کابینہ کی ذیلی کمیٹی آج آگاہ کرے گی، شریف فیملی نے نوازشریف کےلیے ضمانتی بانڈ دینے سے انکار کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق حکومت اورمسلم لیگ ن کےدرمیان نواز شریف کا نام ای سی ایل سےنکالنے پر ڈیڈلاک برقرار ہے، کابینہ کی ذیلی کمیٹی آج صبح دس بجے فیصلے سے آگاہ کرے گی۔

مسلم لیگ ن کو ذیلی کمیٹی کے صبح کے فیصلے کا انتظار ہیں ، ن لیگ نے نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے لیے حکومت پر دباو بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے اور کہا سیکورٹی بانڈز جمع کر ادیئے تو ن لیگ کو سیاسی طور نقصان ہوگا، ذیلی کمیٹی کے فیصلے کے بعد پارٹی حکمت عملی تیار کی جائے گی۔

گذشتہ روز وزیر قانون فروغ نسیم کی زیرصدارت کابینہ کی ذیلی کمیٹی کے اجلاس میں ن لیگ کے نمائندے عطا تارڑ اور ڈاکٹر عدنان نے شرکت کی ، انہوں نے صاف منع کیا کہ نوازشریف ضمانتی بانڈز کسی صورت جمع نہیں کرائیں گے، عطا تارڑ کا کہنا تھا کہ عدالت میں پہلے ہی زرضمانت جمع کراچکے ہیں۔

ذرائع کے مطابق شریف فیملی کا کہنا تھا ضمانتی مچلکوں کےعلاوہ اضافی دستاویزنہیں دی جائیں گی جبکہ نوازشریف نے کہا کہ پاکستان میں علاج کرانے کو تیار ہوں، بانڈز دے کر باہر جانا گوارا نہیں۔

Loading...

میاں نواز شریف واپس نہ آئے تو کون ذمہ دار ہوگا؟ نیب ذرائع

دوسری جانب وزیر قانون فروغ نسیم کی زیرصدارت کابینہ کی ذیلی کمیٹی نے شریف خاندان کے نمائندوں اور نیب کو صبح دس بجے تک کا وقت دیا ہے اور کہا کہ اگر شریف فیملی اپنا موقف تبدیل کرتی ہے تو آگاہ  کر دے جبکہ ن لیگ کے نمائندے عطا تارڑ کو حتمی مؤقف جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

کمیٹی کی جانب سے نیب کو کہا گیا کہ اگر وہ نیا جواب جمع کرانا چاہتے ہیں تو دس بجے صبح تک کرادے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مشروط کی منظوری دے دی گئی تھی، ذرائع کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو باہر جانے کے لئے سیکیورٹی بانڈز دینا ہوں گے۔

(Visited 29 times, 1 visits today)
loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں