کن لوگوں‌ کو مچھر زیادہ کاٹتے ہیں ؟

کیا آپ کو معلوم ہے کہ مچھر دنیا کا سب سے خطرناک جاندار ہے ؟ اور یہ دعویٰ عالمی ادارہ صحت کا ہے۔

جس کی وجہ یہ ہے کہ مچھر کی بدولت ملیریا، ڈینگی اور اب مختلف ممالک میں زیکا وائرس جیسے امراض پھیل رہے ہیں جن کے نتیجے میں ہر سال لاکھوں اموات ہوتی ہیں۔

ویسے تو مچھروں کو دور رکھنے کے لیے مختلف اسپرے یا ریپیلنٹ موجود ہیں مگر یہاں ہم ایسے گھریلو نسخے بتارہے ہیں جو مچھروں کے کاٹنے کے بعد ہونے والی جلن اور خارش پر قابو پانے میں مدد دیتے ہیں۔ وہ لوگ جو سانس لیتے وقت زیادہ کاربن ڈائی آکسائیڈ باہر نکالتے ہیں وہ لوگ مچھروں کے پسندیدہ ہوتے ہیں۔

دنیا کا وہ ملک جہاں ایک بھی مچھر نہیں !

ورزش کرنے کی صورت میں لیکٹک ایسڈ پیدا ہوتا ہے اور اس کا پسینے کے ساتھ نکلنا مچھروں کو آپ کی طرف راغب کرسکتا ہے۔مچھر ‘او ‘ خون گروپ والے لوگوں کو زیادہ کاٹتے ہیں۔ جن کی جلد پر زیادہ اقسام کے بیکٹیریا موجود ہوتے ہیں مچھر ان کی جانب کم راغب ہوتے ہیں۔ کچھ اجسام جازب مرکبات خارج کرتے ہیں.

جبکہ کچھ دافع مرکبات خارج کرتے ہیں۔ یہ ابھی تک واضح نہیں ہے کہ یہ کام کیسے کرتے ہیں اگر چہ محققین ان کیمیکلز کو کیڑوں کے قدرتی اسپرے کیلئے علیحدہ کرنے کی کوشش کرچکے ہیں۔ملیریا کے مچھر حاملہ خواتین کی جانب ، غیر حاملہ خواتین کی نسبت دوگنا زیادہ راغب ہوتے ہیں۔

(Visited 517 times, 1 visits today)
loading...

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں