احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو ہٹانے سے متعلق نوٹی فکیشن جاری

ارشد ملک

اسلام آباد : وزارت قانون نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو ہٹانے سے متعلق نوٹی فکیشن جاری کردیا ، جسٹس عامر فاروق تین نام وزارت قانون کچھ دیر میں بھیجیں گے.

جس کے بعد وزارت قانون ایک نام فائنل کر کے نوٹی فکیشن جاری کردے گی۔ تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت نمبر 2 کے جج ارشد ملک کو ہٹانے سے متعلق نوٹی فکیشن جاری کردیا گیا ، وزارت قانون نے نوٹی فکیشن جاری کیا، جس کی کاپی رجسٹرارآفس کومل گئی ہے۔ نوٹی فکیشن کے مطابق ارشد ملک بطورجج احتساب عدالت کورٹ نمبر 2 کام نہیں کرسکتے۔

جسٹس عامر فاورق نے رجسٹرارسے سیشن ججز کی فہرست منگوا لی ، جسٹس عامر فاروق تین سیشن ججز کے نام شارٹ لسٹ کر کے وزارت قانون کو بھجوائیں گے۔ جس کے بعد وزارت قانون تینوں ناموں سے ایک نام فائنل کر کے نوٹی فکیشن جاری کردے گی۔

یاد رہے مبینہ ویڈیو کے معاملے پر قائم مقام چیف جسٹس اسلام آبادہائی کورٹ کی جانب سے وزارت قانون کوخط لکھا تھا، جس میں کہا گیا تھا کہ جج ارشدملک کے بیان کو نواز شریف کیس سےمنسلک کیا جائے اور وزارت قانون جج ارشد ملک کی خدمات واپس لے۔ مبینہ ویڈیو کے معاملے پر اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج ارشدملک کو عہدے سے ہٹانےکا فیصلہ کیا تھا۔

اس سے قبل جج ارشدملک نے اسلام آبادہائی کورٹ کےرجسٹرارسے ملاقات کی اورمبینہ وڈیو پر بیان حلفی کےساتھ جواب جمع کرایا تھا ، جس میں جج ارشد ملک نے کہا تھا ان کےخلاف پروپیگنڈا کیا جا رہا ہے اور انھیں بلاوجہ بدنام کیا جارہا ہے، حلفیہ کہتا ہوں میرا اس ویڈیو سے کوئی تعلق نہیں، ویڈیو کو ایڈٹ کرکے چلایا گیا ہے۔

واضح رہے مریم  نواز پریس کانفرنس میں احتساب عدالت کے جج کی خفیہ کیمرے سے بنی مبینہ ویڈیو سامنے لے آئیں تھیں ، جاری کردہ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو میں کہا جارہا ہے کہ نوازشریف کےساتھ زیادتی اورناانصافی ہوئی۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں