خلافت عثمانیہ کے بارے میں آپ کیا جانتے ہیں؟ … ( قسط نمبر 1)

خلافت عثمانیہ

خلافت، تاریخ کا سب سے قدیم اسلامی طرزِ حکومت ہے- حضرت محمدؐ نے اسلامی ریاست/خلافت (ریاستِ مدینہ) کی بنیاد پہلی ہجری (1AH) میں رکھی تھی. حضرت محمدؐ پر رب العزت نے دین اسلام کو مکمل کر دیا اور اسلامی ریاست یا نظام خلافت کو رہتی دنیا کے لیے حکومت چلانے کا طریقہ کار طے کردیا اور خلافت عثمانیہ دور جدید کی آخری خلافت ٹھری.

آج آپ آن لائن خلافت عثمانیہ کے بارے میں تفصیلی تحریر پڑھنے جارہے ہیں. خلافت عثمانیہ کی تاریخ جاننے کے لئے اس کے جغرافیائی خدوحال کو سمجھنا لازمی ہے. پھر ہی آپ اس سنہرے دور میں واپس جا سکیں گے. علاوہ ازیں اس خلافت کا تاریخی پس منظر، قیام و وسعت ، محدودیت اور انجام و اختتام کی وجوہات اور محرکات کو سمجھ سکیں گے.

 تاریخی پس منظر (1924-1200)

سلطنت عثمانیہ عالمی تاریخ کی سب سے طاقتور اور طویل المدت سلطنت تھی. اسلامی طرز پر چلنے والی یہ خلافت دنیا کے لئے سپر پاور سمجھی جاتی تھی۔ جسے انگریزی میں The Ottoman Empire کہتے ہیں اور جس میں مشرق وسطی، مشرقی یورپ اور شمالی افریقہ کے بڑے علاقے شامل تھے۔ جن پر 600 سے زیادہ سال تک مسلمانوں نے حکومت کی۔
خلافت کے سربراہ کو سلطان کے نام سے جانا جاتا تھا۔ سردار کو اپنی عوام پر مکمل مذہبی اور سیاسی اختیار حاصل ہوتا تھا۔ اگرچہ ًگربی ممالک کے لوگ عام طور پر انہیں ایک خطرہ کے طور پر دیکھتے ہیں. بہت سے مؤرخین سلطنت عثمانیہ کو عظیم علاقائی استحکام اور سلامتی کے ساتھ ساتھ فنون لطیفہ، سائنس، مذہب اور ثقافت میں اہم کارناموں کے طور پر بھی مانتے ہیں۔

عثمانیہ خلافت قرون وسطی سے بننے والی اور ابتدائی جدید زمانے (Early Modern Era) کی آخری خلافت تھی. جس کا عرصہ 13 صدیوں پر محیط تھا. جو 1924 میں ختم ہوا۔ گیارہویں صدی کے اسلامی دور میں مختلف ریاستیں قائم ہوئیں۔ جس میں دین اسلام اور خلافت چین اور دیگر ایشیائی ریاستوں میں پھیلنے لگا۔ یہی خلافت یورپی ریاستوں پر جال بنائے ہوئے تھی. ساتھ ہی ساتھ افریقی ریاستوں پر فتوحات کے جھنڈے گاڑھے ہوئے تھی. شاید اسی وجہ سے عثمانیہ ریاست کو تین براعظموں کی خلافت بھی کہا جاتا تھا.

سلطنت عثمانیہ کے جغرافیائی خدوحال

شمالی افریقہ کی ساحلی پٹی کی متعدد ریاستیں، بحیرہ روم کی ساحلی پٹی اور متعلقہ ریاستیں، یورپی ممالک جن میں الجزائر، تیونس، مصر، لیبیا، لبنان، سعودی عرب، شام، عراق، اردن، اسرائیل، فلسطین، یونان، ترکی، بلغاریہ، رومانیہ، مکتونیہ وغیرہ سلطنت عثمانیہ میں شامل تھیں.

خلافت عثمانیہ

کبھی یہ سارے ممالک کو ملا کر ایک سلطنت قائم تھی. جسے “سلطنت عثمانیہ” کہتے تھے۔ تین براعظموں پر مشتمل یہ سلطنت کیسے وجود میں آئی اور کیسے دنیا کی سپر پاور بنی اور پھر کیسے تباہ و برباد ہو گئی کہ آج اسکی داستان تلاش کرنا بھی ایک کھٹن کام ہے۔

مؤرخین لکھتے ہیں کہ اس خلافت کا جال چینی اور روسی ریاستوں تک بھی پھیل رہا تھا. جنگ کے بغیر فتح سمر قند کا تاریخی واقعہ عثمان خلافت کے عدل و انصاف اوراسلام کی سر بلندی کا منہ بولتا ثبوت ہے.

(جاری ہے۔۔۔)

List of all the Countries lie Under The Ottoman Empire — عثمانیہ ریاستیں

(Visited 5,740 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں