کراچی: نرسز کا وزیراعلیٰ ہاؤس کی جانب مارچ، پولیس کا لاٹھی چارج

نرسز

ستعمال سے مظاہرین کو منتشر کرنے کی کوشش بھی کی گئی تاہم نرسز ڈٹی رہیں اور شدید ۔نعرے بازی کرتی رہیں

سندھ بھر کی نرسوں نے اپنے مطالبات کے حق میں پریس کلب سے احتجاجاً وزیراعلیٰ ہاؤس کی طرف مارچ کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد پولیس نے وزیراعلیٰ ہاؤس جانے والے راستے پر رکاوٹیں لگا دیں۔

نرسوں نے وزیراعلیٰ ہاؤس جانے کی کوشش کی تو پولیس نے مظاہرین کو پی آئی ڈی سی ٹریفک پولیس چوکی کے سامنے روک دیا، مظاہرین کے آگے جانے کی کوشش پر پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپ ہوئی جس کے بعد پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے واٹر کینن کا استعمال کیا اور متعدد مظاہرین کو بھی حراست میں لے کر تھانے منتقل کردیا۔

نرسوں کے احتجاج کے باعث پی آئی ڈی سی جانے والے راستے کو بھی بند کردیا گیا ہے جب کہ ٹریفک کو ایم آر کیانی روڈ اور سلطان آباد کی طرف موڑا جارہا ہے۔

ٹریفک جام کے باعث پی آئی ڈی سی سے شاہین کمپلکس تک ٹریفک کی لمبی قطاریں لگ گئیں جس میں اسکول کی گاڑیاں بھی پھنس گئیں، پولیس نے شاہین کمپلکس سے ضیاءالدین روڈ ٹریفک کے لیے بند کردیا ہے۔

صورتحال پر قابو پانے کے لیے رینجرز کی بھاری نفری بھی موقع پر پہنچ گئی ہے۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں