شہزادہ واقعی شہزادہ نکلا

شہزادہ واقعی شہزادہ نکلا

ویسے آپ سمجھ تو گئے ہی ہوں گے کہ میں کس شہزادے کی بات کر رہی ہوں۔ تو اگر آپ سمجھ گئے ہیں تو بالکل ٹھیک سمجھے ہیں میں بات کرنے والی ہوں سعودی شہزادہ محمد بن سلمان کے بارے میں ۔

جنہوں نے نا صرف پاکستان کے حکمرانوں کے بلکہ پاکستان کی عوام کے بھی دل جیت لیے ۔ اور یہ تو ہم سب نے دیکھا کہ شہزادے کا استقبال کس قدر خوبصورت طریقے سے کیا گیا اور انہیں کتنی عزت اور احترام سے نوازا گیا۔

 پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات

شہزادہ چونکہ سعودی عرب سے آیا ہے تو پھر پاک سعودیہ تعلقات کی ذرا بات کر لیتے ہیں ۔ الحمداللہ شروع سے ہی پاکستان اور سعودیہ کے تعلقات دوستانہ رہے ہیں ۔ سعودی عرب بھی چونکہ پاکستان کی طرح ایک اسلامی ملک ہے اور وہاں مقدس مقامات واقع ہیں جیسے خانہ کعبہ مکہ اور مدینہ وغیرہ تو ہر سال لاکھوں کی تعداد میں پاکستانی عمرہ اور حج کی سعادت حاصل کرنے کے لیئے جاتے ہیں ۔

 قیام پاکستان اور سعودیہ

قیام پاکستان کے وقت سعودیہ ہی ایک ایسا ملک تھا جس نے پاکستان کو فورًا تسلیم کیا اور ہر ممکن ساتھ دیا ۔ اور تب سے ہی دونوں ممالک کے درمیان سفارتی تعلقات قائم ہیں پھر 1951 میں دونوں ممالک کے درمیان دوستی اور باہمی تعاون کا معاہدہ طے پایا ۔

 پاکستان اور سعودی عرب کا باہمی اتحاد

سعودی عرب اور پاکستان اقوام متحدہ اور دیگر بین الاقوامی اداروں میں ایک دوسرے سے بھر پور تعاون کرتے ہیں سادہ الفاظ میں پاکستان اور سعودیہ دو ایسے ممالک ہیں جہنوں نے ہر مشکل گھڑی میں ایک دوسرے کا ساتھ دیا ۔ دونوں ممالک میں ذہنی ہم آہنگی ہونے کے باعث اتفاق پایا جاتا ہے ۔

 پاکستانی ملازمین

پاکستانیوں کی کثیر تعداد سعودی عرب میں مختلف شعبوں میں کام کر رہی ہے ۔ یہ پاکستانی ملازمین تاجر ، ڈاکٹر ، انجینیئر اور دوسری افرادی قوت کی حیثیت سے سعودی عرب کی ترقی میں حصہ لے رہے ہیں ۔

پاکستان کی مدد

سعودیہ نے پمیشہ پاکستان کا ساتھ دیا پھر چاہے وہ مسئلہ کشمیر ہو یا مسئلہ فلسطین ۔ 1974 میں سوات کے زلزلہ زدگان کی امداد کے لیئے بھی سعودی عرب نے دس کروڑ روپے دے کر برادرانہ تعلقات کی اعلیٰ مثال قائم کی ۔

ان باتوں کا زکر صرف اس لیئے کیا گیا کہ پاک سعودیہ تعلقات شروع سے ہی الحمداللہ بہت اچھے ہیں اور اب سعودی شہزادے کے آنے سے مزید تعلقات خوشگوار ہو گئے ہیں ۔

شہزادہ محمد بن سلمان

محمد بن سلمان سعودی عرب کے موجودہ بادشاہ کے بیٹے ہیں اب ڈپٹی وزیراعظم اور مستقبل میں بادشاہ بن جائیں گے ۔ اس کے علاوہ محمد بن سلمان تین بلین ڈالرز کے مالک ہیں ۔ اور انہوں نے ماسٹرز کیا ہوا ہے ۔

 شہزادہ محمد بن سلمان کی پاکستان آمد

جب محمد بن سلمان پاکستان آئے تو انہیں چھ اہئر جیٹس نے سلامی دی ۔ پھر عمران خان خود گاڑی ڈرائیو کر کے وزیراعظم ہاوس لائے اور انہیں 21 توپوں کی سلامی بھی دی گئی ۔

اس کے بعد عمران خان کے ساتھ بگی میں بیٹھ کر ایوان صدر گئے جوکہ شاہی پروٹوکول تھا پھر انہیں نشان پاکستان سے نوازا گیا ۔

 سعودی شہزادہ اور پاکستانی شہزادے کی بات چیت

عمران خان نے ان سے پاکستانی مزدوں کو سہولیات دینے اور پاکستانی قیدیوں کو رہا کرنے کی بات کی تو انہوں نے فورًا 2107 قیدیوں کو رہاہ کرنے کا حکم دے دیا یہ کہ کر کے
” ہم پاکستان کو نا نہیں کر سکتے “

واہ عمران خان کمال ہی کر دیا بادشاہوں کی محفل میں غریب عوام کو یاد رکھا ۔

 سات اہم ایگریمنٹ

اس دوران سات ایگریمنٹ ہوئے 20 ارب ڈولر اور 75 ارب ریال کی مفاہمت کی یاداشت پہ دستخط کئے گئے ۔ وہ ایگریمنٹس درج ذیل ہیں !
1) پاکستان کی چیزوں کی تفصیلات اور معیار میں مدد کی جائے گی ۔
2) خام مال اور پٹرولیم میں مدد کی جائے گی ۔
3) بجلی کی پیداوار کے منصوبے ۔
4) آئل ریفائنری اور پٹرولیم کیمیکل شعبوں میں اینویسٹمنٹ ہو گی اور آئل ریفائنری 10 ارب ڈالر کی ہو گی ۔
5) معدنیات میں انویسٹمنٹ ۔
6) قابل تجدید توانائی ۔
7) کھیلوں میں مدد ۔

 ویزا کی فیسوں میں کمی

وزٹ وزا کی فیس 2000 سے 350 اور ورکنگ وزا فیس 6000 سے 650 ریال کر دی گئی ۔

گرین پاکستان

اس کے علاوہ شہزادہ محمد بن سلمان نے عمران خان کے ساتھ وزیراعظم ہاوس میں گرین پاکستان میں حصہ لیتے ہوئے پودا بھی لگایا ۔

 ڈولر میں کمی

سعودی ولی عہد کے پاکستان آتے ہی ڈالر پاکستان میں پورے 43 روپے سستہ ہو گیا ۔ اب ڈولر 138 روپے 40 پیسہ ہو گیا ہے ۔

 ترقی یافتہ ملک

سعودی شہزادے نے یہ بھی کہا کہ ” ہم 2030 میں پاکستان کو ترقی یافتہ ممالک میں دیکھنا چاہتے ہیں اسی لیئے ہم پاکستان کی اس ترقی میں اپنا حصہ ڈالنے آئے ہیں ۔

 تاریخی الفاظ

اس کے علاوہ محمد بن سلمان نے یہ بھی کہا کہ
” آپ سعودی عرب میں مجھے پاکستان کا سفیر سمجھیں “

 شکریہ عمران خان

اس کا کریڈٹ صرف اور صرف ہمارے عمران خان کو جاتا ہے انکی کی لگن اور لوگوں کے ساتھ اپنے وطن کے ساتھ محبت کو جاتا ہے ۔ آخر میں میں بس یہ کہنا چاہوں گی شکر ہے اللہ پاک کا کہ اس نے ہمیں ایسے حکمران سے نوازا جو اس ملک کو اور اس ملک کے لوگوں کو اپنا سمجھتے ہیں ۔ شکریہ عمران خان شکریہ ولی عہد محمد بن سلمان کا کہ وہ یہاں آئے اور اتنا ساتھ دیا ۔ اللہ پاک ان شہزادوں کو اپنی پناہ میں رکھنا ۔ آمین ثم آمین

زونیرہ شبیر

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں