وزیراعظم کی عثمان بزدار سے ملاقات فہرست تیار کرنیکی ہدایت

عثمان بزدار

وزیراعظم عمران خان نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو ہدایت کی ہے کہ جو وزراء کارکردگی نہیں دکھا رہے انہیں گھر بجھوانے کی تیاری کریں۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے وزیراعلٰی پنجاب عثمان بزدار نے ملاقات کی جس میں صوبے کی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے وزیراعلیٰ پنجاب کو صوبے کے حوالے سے روڈ میپ دیا اور صوبائی وزراء کی کارکردگی جانچنے کی ہدایت بھی کی۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پنجاب اہم صوبہ ہے، کارکردگی پر کوئی سمجھوتہ نہیں کروں گا۔

وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ عوام کی پی ٹی آئی سے بہت توقعات ہیں، ان کے اعتماد کو ٹھیس نہیں پہنچنے دیں گے۔

عوام کا احساس نہ کرنے والا وزیر کابینہ میں نہیں رہے گا، وزیراعظم

ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے وزیراعلیٰ پنجاب سے پولیس اصلاحات کے بارے میں اب تک کی پیشرفت سے آگاہی حاصل کی اور انہیں کارکردگی نہ دکھانے والے افسران کی فہرست تیار کرنے کی ہدایت بھی کی۔

گزشتہ روز بھی وزیراعظم عمران خان نے اورکزئی ایجنسی میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ وزیراعلیٰ پنجاب اور وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا اپنی ٹیم پر نظر رکھیں۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ جو وزیر بھی کارکردگی نہیں دکھائے گا اسے تبدیل کر دوں گا، اچھا کپتان وہی ہوتا ہے جو صورت حال کے مطابق اپنے کھلاڑیوں کی پوزیشن تبدیل کرتا رہتا ہے اور ٹیم میں نئے کھلاڑیوں کو بھی شامل کرتا ہے۔

کام نہ کرنے والے وزراء کا بینہ میں نہیں‌ رہیں گے: عمران خان

وفاقی کابینہ میں ردوبدل

خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے 18 اپریل کو وفاقی کابینہ میں بڑے پیمانے پر رد و بدل کرتے ہوئے متعدد وزیروں کے قلمدان تبدیل کردیے تھے۔

عمران خان کی خواہش تھی کہ اسد عمر وزارت خزانہ چھوڑ کر توانائی کی وزارت لے لیں تاہم اسد عمر نے یہ پیشکش قبول کرنے سے انکار کردیا تھا اور عہدے سے مستعفی ہوگئے تھے ساتھ ہی انہوں نے مزید کابینہ کا حصہ نہ رہنے کا بھی فیصلہ کیا تھا۔

اسد عمر کا استعفیٰ منظور، حفیظ شیخ مشیر خزانہ تعینات

فواد چوہدری سے وزارت اطلاعات واپس لے کر وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کا قلمدان دے دیا گیا۔ بریگیڈیئر ریٹائرڈ اعجاز شاہ کو وفاقی وزیر داخلہ بنادیا گیا۔

اس کے علاوہ غلام سرور خان سے وزارت پیٹرولیم لے کر وزارت ایوی ایشن دے دی گئی، شہریار آفریدی اب وزیر مملکت برائے داخلہ نہیں بلکہ وزیر مملکت برائے ریاستی و سرحدی امور‎ (سیفران) ہوں گے۔

محمد میاں سومرو سے ایوی ایشن کی وزارت لے لی گئی ہے جبکہ وزارت نجکاری کا قلمدان ان کے پاس ہی رہے گا۔

ظفراللہ مرزا کو وزیراعظم کا مشیر برائے نیشنل ہیلتھ بنادیا گیا جبکہ فردوس عاشق اعوان کو معاون خصوصی برائے اطلاعات مقرر کردیا گیا۔

فواد چوہدری کا قلمدان تبدیل، حفیظ شیخ مشیر خزانہ، اعجاز شاہ وزیر داخلہ مقرر

عبدالحفیظ شیخ کو مشیر خزانہ بنا دیا گیا ہے اور فی الحال وزیر خزانہ کے نام کا اعلان نہیں کیا گیا۔ اعظم سواتی کو وفاقی وزیر برائے پارلیمانی امور بنا دیا گیا ہے۔

ندیم بابر کو وزیر اعظم کا معاون خصوصی برائے پیٹرولیم ڈویژن تعینات کردیا گیا ہے۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں