بھارت نے مقبوضہ کشمیر کو فرقہ وارانہ بنیادوں پر تقسیم کرنے کی نئی سازش شروع کردی

مقبوضہ کشمیر

سرینگر: بھارت کا مکروہ چہرہ ایک بار پھر بے نقاب ہوگیا، مقبوضہ کشمیر کو فرقہ وارانہ بنیادوں پر تقسیم کرنے کی سازش شروع کردی۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارت نے وادی کشمیر میں مہاجر ہندو پنڈتوں کیلئے علیحدہ کالونیاں قائم کرنے کے ذریعے جموں وکشمیر کو فرقہ وارانہ بنیادوں پر تقسیم کرنے کے اپنے منصوبے پر عمل درآمد کا آغاز کردیا ہے۔

گورنر ستیا پال ملک کی سربراہی میں اسٹیٹ ایڈمینسٹریٹو کونسل نے وادی کشمیر کے مختلف اضلاع میں 1680فلیٹوں پر مشتمل ٹرانزٹ کیمپوں کی تعمیر شروع کرنے کے عمل کا آغاز کردیا ہے۔

قابض انتظامیہ نے ریلیف اینڈ ری ہیب لیٹیشن آرگنائزیشن اور جموں وکشمیر پروجیکٹس کنسٹرکشن کارپوریشن کو منصوبہ بندی، ترقی اور نگرانی کے محکمے سے ضروری فنڈز کی منصوری اور تاخیر کے شکار منصوبے کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور کرنے کیلئے ایک پریزنٹیشن پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔

سرکاری ذرائع نے میڈیا کو بتایا ہے کہ پبلک ورکس ڈیپارٹمنٹ کے انجینئروں کی طرف سے تیار کی گئی منصوبے کی چھ تفصیلی رپورٹوں کا جائزہ لیا گیا ہے۔

نریندر مودی نے کلبھوشن کیس میں‌ بھارتی شکست کو بھی فتح قرار دیدیا

رپورٹس میں بارہمولہ کے علاقے خواجہ باغ میں  336فلیٹ، کپواڑہ کے علاقے مغل پورہ میں 288، شوپیاں کے علاقے پنڈوان میں 192، بانڈی پورہ کے علاقے اوڈینہ سنبل میں480، گاندربل کے علاقے وند ہامہ میں 192 اور اسلام آباع کے علاقے مرہامہ میں 192فلیٹوں کی تعمیر شامل ہے۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں