ٹیکس دہندگان کی پذیرائی

ٹیکس چور

وزیراعظم نے کہا کہ ٹیکس چور ملک اور قوم کے دشمن ہیں۔ ان کے خلاف کسی قسم کی کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی..

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں ریونیو اکٹھا کرنے کے سلسلے میں کیے جانے والے حکومتی اقدامات کے حوالے سے اجلاس میں چیئرمین ایف بی آر نے ٹیکس اکٹھا کرنے ، ٹیکس بیس میں اضافے اور نادہندگان سے ٹیکس وصولی کے لیے کیے جانے والے نئے اقدامات سے آگاہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہائی نیٹ ورتھ افراد کے چھ ہزار سے زائد کیسز زیر غور ہیں جن سے کل دو ارب سے زائد کی آمدن متوقع ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ٹیکس چور ملک اور قوم کے دشمن ہیں۔ ان کے خلاف کسی قسم کی کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی۔ٹیکس چوری اور کرپشن کے خلاف تحریک انصاف واضح موقف رکھتی ہے۔ اس حوالے سے وہ کسی سمجھوتے پر تیار نہیں حالانکہ اسے کئی سیاسی مخالفتوں کا سامنا بھی ہے۔ ملکی مالی امور چلانے کا بڑا ذریعہ ٹیکسز ہیں۔ بدقسمتی سے ٹیکس چوری کا رجحان بڑھتا رہا۔ قرض معاف کرانے کی وبا اپنی جگہ ہے۔

قرض لینے والوں کو ماضی میں ایک فارم قرض معافی کا بھی دیدیا جاتا تھا، جو قرض خواہوں کی حوصلہ افزائی کا باعث بنتا رہا۔ اسی طرح ایف بی آر جس کی ذمہ داری ٹیکس وصولی ہے اور ہر اہلکار کو اس کا باقاعدہ معاوضہ ملتا ہے مگر محکمہ کی کئی کالی بھیڑیں ٹیکس دہندگان کو ٹیکس چوری کے راستے دکھاتی ہیں۔ ٹیکس چور اور ٹیکس چوری کی ترغیب دینے والے یکساں قومی مجرم ہیں۔

ٹیکس
File Photo
ٹیکس دہندگان کی پذیرائی

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں