سری لنکا میں مسلمانوں کو سنگسار کرنے کا حکم جاری کردیا

سری لنکا

سری لنکا میں ایسٹر حملوں کے بعد سے مسلمانوں کے خلاف نفرت میں اضافہ ہورہا ہے جس میں بدھ راہب وقتاً فوقتاً نفرت پر مبنی بیانات جاری کرکے اضافہ کرتے رہتے ہیں۔ حال ہی میں سری لنکا کے سب سے بڑے بدھ راہب نے اپنے پیروکاروں کو مسلمانوں کو سنگسار کرنے کا حکم دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سری لنکا میں مسلم اقلیت کو تب سے نئے حملوں کا خطرہ لاحق ہو گیا ہے جب ایک بڑے بدھ راہب نے حکم جاری کیا کہ مسلمانوں کو سنگسار کیا جانا چاہیے۔

یہ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ ایک مسلمان ڈاکٹر نے ہزاروں بدھ خواتین کو بانجھ بنا دیا ہے، اس غیر مصدقہ اطلاع پر بدھ راہب نے مسلم اقلیت کے خلاف ایک نئی نفرت پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔

بدھ راہب واراکاگودا سری نے کہا کہ مسلمانوں کے کاروبار کا بھی بائیکاٹ کیا جائے، اور ان کی دکانوں کو جلایا جائے، مسلمانوں کے ریسٹورنٹس ایک سازش کے تحت سنہالا بدھ کمیونٹی کی آبادی کو بانجھ بنا رہے ہیں۔

راہب نے اپنے پیروکاروں کو مسلمانوں کے ہوٹلوں سے کھانا کھانے سے بھی منع کر دیا ہے، ان کا کہنا تھا کہ جو بھی ان ریسٹورنٹس سے کھائے گا ان کے ہاں بچے پیدا نہیں ہوں گے، اور دس سے پندرہ سال بعد اس کے نتایج نکلیں گے۔

بدھ راہب کا یہ بھی کہنا ہے کہ قوانین اور ضوابط ضروری نہیں ہیں، اگر ہمارا بھی کوئی آدمی کسی دوسری کمیونٹی کے ساتھ یہ کرتا ہے تو ہم اسے کاٹ کر رکھ دیں گے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی فائرنگ، 4 کشمیری شہید

خیال رہے کہ سری لنکا میں چرچز پر حملوں کے بعد مسلمانوں اور ان کے املاک پر حملے شروع ہو گئے تھے، بدھ راہب کی نفرت انگیز تقریر کے بعد نئے حملوں کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔

(Visited 3 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں