تازہ ترین قومی مشہور خبر پاکستان کی خبریں کھیلوں کی خبریں

نجم سیٹھی 32 ویں چیئر مین پی سی بی منتخب

pcb

شہریار خان کی مدت ملازمت پوری ہونے کے بعد نجم سیٹھی پاکستان کرکٹ بورڈ کے بلا مقابلہ نئے چیئرمین منتخب ہوگئے،ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد گورننگ بورڈ کے اجلاس کی صدارت کی اور ممبران کا شکریہ ادا کیا ۔ بتایا گیا ہے کہ پی سی بی گورننگ بورڈ کا اہم اجلاس نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں ہوا ۔اجلاس شروع ہوتے ہی یہ اعلان کیا گیا کہ بورڈ کا کوئی بھی ممبر چیئرمین کے عہدے کیلئے کاغذات نامزدگی جمع کرا سکتا ہے تاہم کوئی بھی نجم سیٹھی کے مقابلے میں نہیں آیا۔جس پر نجم سیٹھی کو بلا مقابلہ پی سی بی چیئرمین منتخب کرلیا گیا۔ وہ تین سال کے لیے بورڈ کے چیئرمین کی ذمہ داریاں سنبھالیں گے۔نئے گورننگ بورڈ میں 4 ڈپارٹمنٹس یونائیٹڈ بینک، حبیب بینک، واپڈا اور سوئی سدرن گیس کمپنی، جبکہ ریجنز میں لاہور، سیالکوٹ، کوئٹہ اور ایڈہاک کا شکار فاٹا شامل ہیں۔ دوسری جانب پی سی بی حکام کے مطابق نجم سیٹھی نے چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ کے طور پر ذمہ داریاں بھی سنبھال لی ہیں اور انہوں نے گورننگ بورڈ کے اجلاس کی صدارت کی۔اس موقع پر نجم سیٹھی نے گورننگ بورڈ کا شکریہ ادا کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ بورڈ نے جس اعتماد کا اظہار کیا اس پر پورا اتروں گا، پاکستان کرکٹ کی بہتری کے لئے ہمیں مل کر کام کرنا ہے۔بعد ازاں نیشنل کرکٹ اکیڈمی لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ ’مجھ پر بڑی ذمہ داری ہے، بورڈ ارکان کے ساتھ مل کر چلوں گا۔نجم سیٹھی نے کہا کہ وہ پاکستان قوم سے درخواست کرتے ہیں کہ جب پاکستان ٹیم شکست سے دوچار ہوجائے تو صبر کا دامن ہاتھ سے نہ جانے دیں، پاکستان سپر لیگ سے جو ٹیلنٹ آرہا ہے اس تسلسل کو قائم رکھنے کی کوشش کریں گے اور قومی ٹیم میں مزید نوجوان کھلاڑی متعارف کرائیں گے۔پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی بندش کے حوالے سے انہوں نے کہ ملک میں سکیورٹی کے مسائل ہیں لیکن کوشش ہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ پاکستان میں واپس لائی جائے، نیشنل کرکٹ اکیڈمی کو مزید فعال کرنے کے ساتھ ساتھ پاکستان میں سکول کی سطح پر بھی کرکٹ کو مزید مضبوط کیا جائیگا،پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی بحالی سب سے بڑا چیلنج ہے اور پاکستان قوم کو اس حوالے سے جلد اچھی خبریں ملیں گی، سیکورٹی خدشات کے باعث بھارت میں انڈر19 ایشیا کپ پر تحفظات ہیں اس لیے ایشین کرکٹ کونسل کی میٹنگ میں ٹورنامنٹ کو دوسرے ملک منتقل کرنے پر بات کی جائے گی۔ان کا کہنا تھا کہ دورہ ورلڈ الیون کے لیے سکیورٹی انتظامات کے حوالے سے پنجاب حکومت سے بات چیت جاری ہے جبکہ مستقبل قریب میں ورلڈ الیون کے ساتھ ساتھ سری لنکن ٹیم کو بھی دورہ پاکستان پر آمادہ کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے بتایا کہ آئندہ ماہ ستمبر میں کچھ تاریخوں کا فرق آیا ہے لہٰذا ورلڈ الیون کے دورہ پاکستان کے فوراً بعد سری لنکن ٹیم کو بلانے کے لئے کوششیں کی جارہی ہیں۔انگلینڈ میں ہونیوالے ویمنز ورلڈ کپ 2017 ء میں خواتین کھلاڑیوں کی مایوس کن کارکردگی پر بات چیت کرتے ہوئے پی سی بھی چیئرمین کا کہنا تھا کہ ویمن ٹیم نے ٹورنامنٹ میں مایوس کن کارکردگی دکھائی لیکن خواتین کرکٹ سمیت نوجوانوں کے لئے بورڈ مستند منصوبہ تیار کر رہا ہے۔خیال رہے کہ نجم سیٹھی پی سی بی کے بورڈ آف گورنرز کے اجلاس میں متفقہ طور پر آئندہ تین برسوں کے لیے چیئرمین پی سی بی منتخب ہوگئے، ان سے قبل شہریار خان 7 اگست کو اپنی مدت پوری کرنے کے بعد چیئرمین پی سی بی کے عہدے سے ریٹائر ہوئے تھے۔