قومی

6 ماہ میں انڈر پاس اور پل بنا لیتے ہیں، اسپتال کیوں نہیں بنا سکے، یاسمین راشد

images

نوازشریف کی نااہلی کے بعد خالی ہونے والی نشست این اے 120 پر ضمنی انتخاب 17 ستمبر کو ہوگا جس کے لیے تیاریاں حتمی مراحل میں ہیں۔

مسلم لیگ (ن) نے کلثوم نواز کو حلقے سے امیدوار نامزد کیا ہے جب کہ ان کے مدمقابل تحریک انصاف کی رہنما یاسمین راشد ہیں۔

لاہور میں میڈیا سےگفتگو کرتے ہوئے یاسمین راشد نے کہا کہ این اے 120 مسائل کی آماجگاہ ہے یہاں اسپتالوں میں سہولیات میسر نہیں ہیں، حلقے کے اسپتال میں ایک ایک بستر پر تین تین مریض زیرعلاج ہیں۔

یاسمین راشد نے کہا کہ آپ 6 ماہ میں انڈر پاس اور پل بنا لیتے ہیں، اسپتال کیوں نہیں بنا سکے؟ مسلم لیگ (ن) اس حلقے کے لیے ایک اسپتال ہی بنا دیتی۔

ان کا کہنا تھا کہ حلقہ این اے 120 لاہورکا دل ہے مگرلوگ بنیادی سہولتوں سےمحروم ہیں، حلقے کے تمام گھروں میں معلوم کرلیں کہ گھروں میں پانی آتاہے یا نہیں، یہاں کے لوگ پینے کا پانی بھی خریدتے ہیں۔

یاسمین راشد نے مریم نواز پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ شہزادی بلٹ پروف گاڑی میں ووٹ مانگ رہی ہے، کہتی ہیں امی کو ووٹ دو ،ابا کو بچانا ہے۔

انہوں نے چوہدری نثار کو بھی آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ چوہدری نثاربھی کہتے ہیں یہ بچے غیرسیاسی ہیں جو اپنی بادشاہت بچانے نکلے ہیں۔