گجرات میں ظلم کی انتہا!!!

loading...

اطلاعات کے مطابق چار پولیس اہلکار قربانی کے بکرے بیچنے والے بیوپاری سے سوداکر رہے تھے، پولیس اہلکاروں کی پسند کا بکرا بیوپاری 30 ہزار میں دینے پر رضامند تھا۔ مگر پولیس والے بدمعاشی کے ذریعے بیوپاری کو مجبور کرتے رہے کہ مطلوبہ بکرا انہیں 11 ہزار روپے میں بیچاجائے۔ لیکن بیوپاری کے انکار پر پولیس اہلکاروں نے ریلوے لائین کے قریب بندھے ہوئے بیوپاری کے بکروں کو کھول دیا اور بکرےریلوے ٹریک کی طرف بھاگنے لگے۔ جس کی وجہ سے تیز رفتار ٹرین کی ٹکر سے 50 خوبصورت اور قربانی کے لئے تیار بکروں کے ٹکرے ٹکرے ہو گئے اور 21 بکرے انتہائی شدید زخمی ہوئے۔ جنھیں مرنے سے پہلے مجبور ہوکر ذبح کرنا پڑا۔
پولیس کی یہ بدمعاشی ایک عام بیوپاری کا 18 لاکھ روپے کا نقصان کر گئی۔
قانون عوام کا رکھوالا بننے کی بجائے غریب بیوپاریوں کا استحصال کررہا ہے اور اس قانون کی بھینٹ وہ بے زبان بکرے بھی چڑھ گئے۔ جنھیں چند دنوں بعد عید الالضحی پر قربان کیا جانا تھا۔

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک کیخلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر

اپنا تبصرہ بھیجیں