صوبائی دارالحکومت میں رواں برس مختلف علاقوں سے 56 افراد کی لاشیں ملیں

Loading...

لاہور: صوبائی دارالحکومت میں نامعلوم لاشوں کے ملنے کی شرح میں خوفناک حد تک اضافہ ہو گیا۔ پولیس تمام تر دعوﺅں کے باوجود ہلاکتوں کے پیچھے چھپے محرکات پتہ لگا سکی اور نہ ہی درج ہونے والے مقدمات کی تفتیش میں کوئی اہم پیش رفت سامنے آ سکی۔ روزنامہ دنیا کی تحقیقات کے مطابق یکم جنوری سے آج تک شہر کی 6 ڈویژنوں کے مختلف تھانوں کی حدود سے تقریباً 56 نامعلوم مرد اور خواتین اور لڑکوں کی لاشیں مل چکی ہیں۔ ان میں سے بیشتر کو سفاکانہ انداز میں قتل کیا گیا اور کچھ ہلاکتیں نشے کی زیادتی کے باعث ہوئی ہیں۔
نامعلوم لاشوں کے حوالے سے سٹی اور کینٹ ڈویژن سرفہرست رہی ہیں۔ سٹی ڈویژن میں ملنے والی 12 نامعلوم لاشوں میں سے صرف 3 کی شناخت ہو سکی جبکہ کینٹ ڈویژن کی بھی 12 لاشوں میں سے صرف 4 کی شناخت ممکن ہو سکی۔ سول لائن ڈویژن کی حدود سے 10 نامعلوم لاشیں ملی ہیں جن میں سے 5 کی شناخت ہو ئی۔ صدر ڈویژن کے علاقوں سے ملنے والی 9 نامعلوم لاشوں میں سے 3 کی شناخت ہو سکی۔ ماڈل ٹاؤن ڈویژن کی حدود سے 8 نامعلوم افراد کی لاشیں ملی ہیں جن میں 3 کی شناخت ہوئی جبکہ اقبال ٹاؤن ڈویژن سے ملنے والی 5 لاشوں میں سے صرف ایک لاش کی شناخت ہو سکی۔ مجموعی طور پر 56 میں سے صرف 19 لاشوں کی فنگر پرنٹ میچنگ سسٹم کے ذریعے شناخت ہو چکی ہے جبکہ 37 کی شناخت کا عمل تاحال مکمل نہیں ہو سکا

Loading...
(Visited 13 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں