بڑی عید کے بڑے پکوان۔کُنا گوشت

کُنا گوشت

کُنا کہانی : خدیجہ چوہدری
ویسے تو بھائی کی شادی ایسا موقع ہوتی ہے۔ جسے زندگی بھر بھولایا نہیں جاسکتا۔ ہونیوالی بھابھی کیلئے کی جانیوالی شاپنگ سے لے کر بری کے جوڑے، لہنگے کے ساتھ میچنگ جیولری اور مہندی، برات اور پھر ولیمے کی تیاریاں۔ اتنے سال گزرنے کے بعد جب میں خود دو بچوں کی ماں بن گئی ہوں۔ آج بھی مجھے بھائی کیشادی اکثر یاد آتی ہے۔ شادی کی رسومات اور تیاریوں کے علاوہ جو چیز آج تک میرے زہن میں قید ہے وہ مہندی والے دن پیش کئے جانے والا کُنا گوشت ہے۔ جوکہ مٹی کے مٹکوں میں پیش کیا گیا تھا۔

مجھے آج تک یاد ہے کہ مٹکوں سے سالن نکالنے کیلئے لکڑی کی ڈوئیاں استعمال کی گئیں تھیں اور مہمانوں کی پلیٹوں میں مٹن ران کی بوٹیاں اٹھکیلیاں کھا رہیں تھیں۔ گرم گرم نان اور دھویں نکالتا کُنا گوشت ایسا لزیز تھا کہ مجھے آج بھی اس کی خوشبو اور زائقہ یاد ہے۔

کُنا گوشت عمومی طور پر گھروں میں نہیں پکایا جاتا۔ خواتین مٹن کی اس ڈش کو بناتے ہوئے ہچکچاہٹ محسوس کرتی ہیں اور اس کی وجہ یہ کہ کُنا گوشت کو شادی بیاہ اور ڈھابوں کی خصوصی ڈش سمجھا جاتا ہے۔ اور میری جیسی کوئی خاتون اس ڈر سے ہی ایسی تراکیب کو ہاتھ نہیں لگاتی کہ کنا گوشت کو گھر پر بنانا اس کے بس کی بات نہیں۔

لیکن یقین جانئے لزیذ کُنا گوشت پکانا بلکل بھی مشکل نہیں۔ بس کچھ تدابیر کو مدنظر رکھنا ضروری ہے۔

کُنا گوشت پاکستان کے مشہور شہر چنیوٹ کی سوغات ہے۔ چنیوٹ کا فرنیچر پوری دنیا میں مقبول ہے۔ ملکی اور غیر ملکی لوگ اعلی کشیدہ کاری والے فرنیچر کی خاطر چنیوٹ جاتے ہیں اور وہاں سے فرنیچر کے ساتھ ساتھ کُنا گوشت کی یادیں لئے لوٹتے ہیں۔

مزید پڑھیں۔  نواز شریف کو 1979 میں خلائی مخلوق نے ہی کونسلر بنوایا تھا، فواد چوہدری

کُنا گوشت کے بارے میں دلچسپ بات اس کے پکانے کا طریقہ ہے اور برتن کا انتخاب۔ چنیوٹ میں کُنا گوشت کو زیر زمین رکھ کر پکایا جاتا ہے۔ مطلب گڑھا کھود کر لکڑیاں جلا کر مٹی کی ہانڈی میں گھنٹوں دھیمی آنچ پر ڈھانپ کر اس لزیز پکون کو تیار کیاجاتا ہے۔ مٹی کی ہانڈی کی مناسبت سے اسے مٹکا گوشت بھی کہتے ہیں۔

کُنا گوشت کی خاصیت ہے کہ اس میں بہت ہی کم مصالحہ جات استعمال ہوتے ہیں۔ اور وہ مصالحے عموماً گھروں میں باآسانی میسر ہوتے ہیں۔ کُنا گوشت میں بلخصوص بکرے کی ران کا گوشت استعمال ہوتا ہے۔

کنا گوشت کی مقبولیت کی وجہ سے اس میں مختلف اقسام اور مصالحہ جات کا اضافہ ہو چکا ہے۔ اسکی مختلف اقسام اور تراکیب کی خاص وجہ بازار میں دستیاب تیاد شدہ مصالحے، سوشل میڈیا، انٹرنیٹ اور کُوکنگ شوز بھی ہیں۔

کچھ انسانی فطرت بھی تغیر پسند کرتی ہے۔ مگر میری بہنو! آپ اس بکرا عید پر کنا گوشت کو ضرور آزمائیں اور لزیز اور مزیدار کنا گوشت گرم گرم کلچوں کے ساتھ کھانے کے بعد مجھے دعاوؤں میں ضرور یاد رکھیں۔

اجزاء:
بکرے کی ران کا گوشت 1/2-1 کلو بمع ہڈی
پیاز 3 عدد درمیانے سائز کے
لہسن پسا ہوا1 کھانے کا چمچ
ادرک پسا ہوا 1 کھانے کا چمچ
پسا دھنیا 1 چائے کا چمچ
جائفل پسی ہوئی 1/2 چائے کا چمچ
سونف پسی ہوئی 1/2 چائے کا چمچ
سرخ مرچ پسی ہوئی 1 کھانے کا چمچ
لانگ چار عدد
الائچی دو عدد
نمک حسب ذائقہ
کالا زیرہ 1/2 چائے کا چمچ
تیل 3/4 کپ

مزید پڑھیں۔  پاکستان نے ٹی20 سیریز کے دوسرے میچ میں نیوزی لینڈ کو 48 رنز سے شکست دے دی

آٹا
4-3 کھانے کے چمچ 3/4کپ

سجاوٹ کے لئے:
ہرا دھنیا، ہری مرچ، لیموں اور پسا گرم مصالحہ

ترکیب:

اگر مٹی کی ہانڈی میں پکا رہے ہیں تو ہانڈی کو گرم کر لیں۔ ویسے عام ہانڈی یا پریشر کوکر میں بھی پکایا جاسکتا ہے۔
قربانی کے گوشت کے لئے:
پہلے گوشت کو لہسن میں تھوڑا پانی ملا کر پکائیں۔ اس سے گوشت کی بو ختم ہو جائے گی۔

عام طور پر تیل گرم کریں اس میں لہسن ادرک کا پیسٹ شامل کریں۔ پھر گوشت ڈال دیں۔ درمیانی آنچ پر گوشت کو بھونیں زیادہ سخت نہ ہو۔ پھر اس میں باریک کٹا ہوا پیاز شامل کر کے بھونیں۔ اس کے ساتھ پسا دھنیا ڈال دیں پسا دھنیا سے پیاز گل جاتا ہے۔ پانچ دس منٹ کے بعد لال مرچ، پسی جائفل، سونف نمک اور لونگ (دو تین)ڈال کر دو گلاس پانی ڈال کر ہلکی آنچ پر 3-2 گھنٹے ڈھانپ کر پکنے دیں۔ جب گوشت گل جائے تو آٹا کو اوپر دی گئی مقدار میں گھول کر شوربے میں شامل کریں اور مزید پندرہ منٹ پکائیں۔ کالا زیرہ ڈال کر دم دے دیں اور چولہا بند کر دیں۔

گرم گرم نان یا افغانی نان اور لیموں ، دھنیا اور باریک کٹی ہری مرچوں سے سجا کر پیش کریں۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں