واٹر فلٹریشن پلانٹ نہ لگانے سکولوں کے خلاف سخت کاراوئی کی جائے گئی، ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی

پنجاب فوڈ اتھارٹی
loading...

پنجاب فوڈ اتھارٹی کی تعلیمی اداروں کو واٹر فلٹریشن پلانٹ کی تنصیب کے حوالے سے دی گئی ڈیڈ لائن ختم ہو گئی۔

پنجاب فوڈ اتھارٹی کی صوبہ بھر کے سکولوں میں پینے کے صاف پانی کے پلانٹ لگانے کے حوالے سے دی گئی ڈیڈ لائن ختم ہو گئی۔ صوبہ بھر کے70 ہزار پرائیویٹ اور 60 ہزار سرکاری سکولوں کی انسپکشن شروع کر دی گئی۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی نے تعلیمی اداروں کو صاف پانی کی فراہمی کیلئے تین ماہ کی ڈیڈ لائن کے ساتھ واٹر فلٹریشن پلانٹ لگانے کی ہدایات کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ طلبہ کو صاف پانی کی فراہمی کے لیے واٹر فلٹریشن پلانٹ نہ لگانے والے سکولز کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔

ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے واضح کیا کہ طلباء کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی سکولز کی اولین ذمہ داری ہے جبکہ فلٹریشن پلانٹ نہ ہونے پر طلبہ نل کا پانی پینے پر مجبور ہوتے ہیں جو کہ متعدد موذی بیماریوں کا سبب بنتا ہے۔

ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے مزید کہ تمام سکولز فیسوں کی مد میں طلباء سے صاف پانی فراہم کرنے کے چارجز بھی وصول کرتے ہیں۔ دو روزہ انسپکشن کے بعد واٹر فلٹریشن پلانٹ نہ لگانے والے سکولزکے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لاتے ہوئے بھاری جرمانے کیئے جائیں گے۔

Spread the love

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  کراچی، پانی کی فراہمی کے لیے قائم واٹر بورڈ کا آن لائن سسٹم ناکام

اپنا تبصرہ بھیجیں