سپریم کورٹ کی متعلقہ اداروں کو اسحاق ڈار کی واپسی سے متعلق اقدامات جاری رکھنے کی ہدایت

اسحاق ڈار
loading...

اسلام آباد : سپریم کورٹ میں اسحاق ڈار کی وطن واپسی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ وزارت داخلہ نے سابق وزیرخزانہ کو بلیک لسٹ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں اسحاق ڈار سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔

عدالت عظمیٰ میں سماعت کے آغاز پراٹارنی جنرل نے بتایا کہ اسحاق ڈارکا سفارتی وعام پاسپورٹ منسوخ کیا جاچکا ہے اور وزارت داخلہ نے اسحاق ڈار کو بلیک لسٹ کردیا، اس وقت ان کے پاس کوئی سفری دستاویز نہیں ہیں۔

چیف جسٹس نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ پھر اسحاق ڈار کیسے واپس آئیں گے جس پر انہوں نے جواب دیا کہ انہیں وطن واپس لانے کا طریقہ کار موجود ہے۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے سوال کیا کہ اٹارنی جنرل کیا آپ نے یہ معاملہ دیکھا ہے؟ کیا اب بھی ریاست اسحاق ڈار کو واپس نہیں لاسکتی؟ اٹارنی جنرل نے جواب دیا کہ اس کے لیے وہاں کی عدالتوں میں جانا پڑے گا۔

نیب پراسیکیوٹرجنرل نے عدالت عظمیٰ کو آگاہ کیا کہ اسحاق ڈار کی جائیدادیں شناخت کرلی ہیں، جائیدادیں منسلک کرنے کی کارروائی جاری ہے۔

سپریم کورٹ میں سماعت کے دوران اٹارنی جنرل نے کہا کہ اسحاق ڈار کی واپسی پرمتعلقہ محکموں سے مشاورت جاری ہے۔

بعد ازاں عدالت عظمیٰ نے متعلقہ اداروں کو اسحاق ڈار کی واپسی کے اقدامات جاری رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے کیس کی سماعت ایک ہفتے تک ملتوی کردی۔

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  ایم کیوایم ایسا شیطان ہے جو زندہ رہ کر لوگوں کا خون پیئے گا،مصطفی کمال

اپنا تبصرہ بھیجیں