توہین عدالت کیس، ڈاکٹرعامر لیاقت کی معافی مسترد، عدالت کا 27 ستمبر کو فرد جرم عائد کرنے کا حکم

عامر لیاقت

اسلام آباد: سپریم کورٹ آ ف پاکستان نے توہین عدالت کیس میں تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور اینکر پرسن ڈاکٹر عامر لیاقت کی معافی مسترد کردی اور 27 ستمبر تک ان کے خلاف فرد جرم عائد کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے ڈاکٹر عامر لیاقت کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کی، عدالت نے عامر لیاقت کی معافی کی استدعا مستر دکردی، عدالت نے عامر لیاقت کے خلاف 27 ستمبر کو فرد جرم عائد کرنے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہا ہے کہ ڈاکٹرعامر لیاقت کے پاس 2 آپشن ہیں کہ یا تو وہ مقدمے کی پیروی کریں یا خود کو عدالت کے رحم و کرم پر چھوڑ دیں عدالت نے ڈاکٹر عامر لیاقت کو وقت دیتے سماعت 27 ستمبر تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ اینکر پرسن عامر لیاقت کو توہین آمیز گفتگو کرنے پر سپریم کورٹ نے نوٹس جاری کیا تھا اور ان سے 14 دن میں جواب طلب کر رکھا تھا۔

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  شام پر امریکی حملے کے سنگین نتائج ہونگے: روس

اپنا تبصرہ بھیجیں