چین کے ‘کوانٹم سیٹلائٹ’ سے لی گئی 24.9 بلین پکسلز کی تصویر کی حقیقت سامنے آگئی

ان دنوں سوشل میڈیا اور مختلف ویب سائٹس پر ایک حیرت انگیز تصویر کا چرچا ہے، جس کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ یہ ایک چینی سیٹلائٹ سے کوانٹم ٹیکنالوجی کے ذریعے لی گئی 24.9 بلین پکسلز کی تصویر ہے۔

یہ وائرل تصویر 360 ڈگری کی ‘برڈ آئی ویو’ تصویر ہے اور اسے اس قدر زوم اِن کیا جا سکتا ہے کہ آپ سڑکوں پر چلنے والے لوگوں کی شکلیں اور گاڑیوں کی نمبر پلیٹوں پر درج باریک سے باریک تفصیلات بھی واضح پڑھ سکتے ہیں۔

اس تصویر کی خاص اور حیران کن بات یہ ہے کہ آپ جتنا بھی زوم اِن کریں آپ کو وہاں موجود چیزیں اور لوگ مزید واضح ہوتے چلے جائیں گے۔

آپ خود اسے اس لنک پر دیکھ سکتے ہیں۔

دی ٹائمز ناؤ سمیت کئی بڑی ویب سائٹس نے لکھا کہ یہ تصویر ‘کوانٹم ٹیکنالوجی’ کا شاہکار ہے جو کہ ایک چینی سیٹلائٹ میں نصب ہے۔

لیکن درحقیقت سیٹلائٹ اور کوانٹم ٹیکنالوجی جیسے الفاظ اس لیے استعمال کیے جا رہے ہیں تاکہ تصویر کو وائرل کیا جا سکے۔

ایک ٹوئٹر صارف نے تصویر کو سمجھے بغیر ٹوئٹ کیا کہ یہ سیٹلائٹ سے لی گئی ہے۔ تاہم تھوڑی تحقیق کے بعد جلد ہی اسے اپنی غلطی کا احساس ہوا اور اس نے دوبارہ ٹوئٹ کیا کہ یہ تصویر ایک اسٹوڈیو ‘بگ پکسل ٹیکنالوجی کارپوریشن’ نے بنائی اور اسے شنگھائی کے اورینٹل پرل ٹاور کی چھت سے لیا گیا جبکہ بگ پکسل کا کہنا ہے کہ یہ تصویر 195 گیگا پکسل کی ہے۔

Leave a Reply