پی ٹی آئی حکومت کا فنانس ایکٹ 2018 میں ترامیم لانے کا فیصلہ

پی ٹی آئی

اسلام آباد: پی ٹی آئی حکومت نے فنانس ایکٹ 2018 میں ترامیم لانے کا فیصلہ کر لیا جس کا مقصد بجٹ اور تجارتی خسارہ کم کرنا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق حکومت ترقیاتی بجٹ میں 400 ارب روپے کی کمی کا ارادہ رکھتی ہے،ایف بی آرمیں متعدد اقدامات سے400 ارب روپے سے زیادہ کے ٹیکسزلگائے جائیں گے اور حکومت 1 فیصد کی شرح سے تمام اشیا پردرآمدی ڈیوٹی عائد کرنے کاارادہ رکھتی ہے۔

جس کے لئے ٹیکس پراستثنا  12 لاکھ روپے سالانہ سےکم کرکے 8 لاکھ روپے سالانہ کرنے کی تجویزدی گئی ہے

 جبکہ تمام درآمدی اشیا پر1 فیصد کی شرح سے درآمدی ڈیوٹی عائد کرنےکی تجویز بھی زیرغور ہے۔ اس مقصد کے لیے پی ٹی آئی حکومت نے فنانس ایکٹ 2018 میں ترامیم لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

 جس کا مقصد بجٹ اور تجارتی خسارہ کم کرنا ہے، فنانس ایکٹ میں ترامیم قومی اسمبلی اجلاس میں منظور کرائی جائیں گی اور فنانس ایکٹ میں ترامیم کے ذریعے800 ارب روپے کا اضافی ریونیو حاصل کیا جائے گا۔

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک کی زیر صدارت اجلاس

اپنا تبصرہ بھیجیں