مسلم لیگ ق اور تحریک انصاف کے مشترکہ امیدوارچودھری پرویز الہٰی 201ووٹ لے کر اسپیکر پنجاب اسمبلی منتخب

چودھری پرویز الہٰی
loading...

لاہور: پاکستان تحریک انصاف اور مسلم لیگ ق کے مشترکہ امیدوار چودھری پرویز الہٰی اسپیکر پنجاب اسمبلی منتخب ہو گئے۔

مجموعی طور پر 349 ووٹ کاسٹ کئے گئے، چودھری پرویز الہٰی نے 201 ووٹ جبکہ مسلم لیگ ن کے امیدوار چودھری اقبال گجر نے 147 ووٹ حاصل کئے، ایک ووٹ مسترد ہوا۔
سبکدوش ہونے والے اسپیکر پنجاب اسمبلی رانا اقبال نے نومنتخب اسپیکر چودھری پرویزالہٰی سے حلف لیا۔ پنجاب اسمبلی کے ایوان میں ارکان نے خفیہ ووٹنگ کے ذریعے حق رائے داہی کا استعمال کیا۔

ووٹنگ کے دوران تین بار ہنگامہ آرائی کے واقعات پیش آئے، ووٹ دکھانے پر تحریک انصاف کی ایک خاتون صادقہ صاحب داد خان کا ووٹ کینسل کیا گیا۔ پیپلز پارٹی کے ارکان اسمبلی نے اسپیکر الیکشن میں حصہ نہیں لیا۔

پنجاب اسمبلی کے ایوان میں تحریک انصاف کے 176 اور ان کی اتحادی جماعت مسلم لیگ ق کے 10 ارکان تھے۔ مسلم لیگ ن کے پنجاب اسمبلی کے ایوان میں 162 ارکان موجود تھے۔

خیال رہے پنجاب کی 17 ویں اسمبلی کے نو منتخب ارکان نے گزشتہ روز حلف اٹھایا، سپیکر رانا محمد اقبال نے ان سے حلف لیا۔ لیگی ارکان نے سیاہ پٹیاں باندھ کر خاموش احتجاج کیا،

پنجاب اسمبلی کے 371 کے ایوان میں سے 354 نو منتخب ارکان نے حلف لیا، چودھری نثار، عظمیٰ قادری اور میاں جلیل سمیت 5 نومنتخب ارکان حلف اٹھانے کیلئے پنجاب اسمبلی نہ پہنچ سکے،

6 حلقے نشستیں چھوڑنے پر خالی ہو گئے 3 پر الیکشن ہی نہیں ہوا اور الیکشن کمیشن نے 3 حلقوں کے رزلٹ روک رکھے ہیں۔
پنجاب اسمبلی میں تحریک انصاف کے 176 ممبران نے حلف اٹھایا جن میں 139 جنرل، 33 خواتین اور 4 اقلیتی ارکان شامل ہیں۔

مزید پڑھیں۔  الیکشن کمیشن نے معذور افراد کی الیکشن میں ڈیوٹیا ں لگا دیں

مسلم لیگ ن کے 162 ارکان نے حلف اٹھایا جن میں 128 جنرل، 30 خواتین اور 4 اقلیتی ارکان شامل ہیں۔ مسلم لیگ ق کے 10، پیپلز پارٹی کے 7، راہ حق پارٹی کا ایک اور 3 آزاد ارکان بھی حلف اٹھانے والوں میں شامل ہیں، 13 اراکین اسمبلی نے تاخیر سے پہنچنے کے باعث بعد میں حلف اٹھایا۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں