کچرے سے بجلی تیار کرنے کا منصوبہ خوش آئند ہے ،پیاف

کچرے سے بجلی

لاہور: پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) نے کچرے سے بجلی تیار کرنے کا منصوبہ خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ لاہور کی تاجر برادری جگہ جکہ کوڑے کے ڈھیروں سے پھیلنے والی آلودگی سے نجات حاصل کر سکیں گے اسکے ساتھ ساتھ بجلی کا حصول بھی ممکن ہو گا

چیئرمین پیاف عرفان اقبال شیخ ،وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا کہ نیپرا نے ایک چینی کمپنی کو کچرے سے بجلی بنانے کا لائسنس دیا ہے،یہ پلانٹ لاہور میں لگایا جائیگا اس منصوبے پر عملدرآمد کے بعد روزانہ دو ہزار میٹرک ٹن کوڑا کرکٹ ٹھکانے لگایا جائیگا جبکہ 40 میگاواٹ بجلی بھی پیدا ہوا کرے گی،اس پلانٹ میں جدیدترین ٹیکینالوجی استعمال کی جائے گئی۔نیپرا نے چینی کمپنی سے کچرے سے بجلی تیار کرنے واے پاور پلانٹ کے لئے 25سال تک دس سینٹ کلوواٹ اپ فرنٹ ٹیرف طے کیا ہے۔یہ منصوبہ اس اس لحاظ سے نہایت مفید ثابت ہو گا کی لاہور میں ہزاروں میٹرک ٹن کچرا روزانہ خودنخود ٹھکانے لگایا جائے گا۔اور ملکی ٖضرورت کے لیے توانائی کے حصول کا کام ہوا کرے گا۔

loading...

گزشتہ تین سے چاردہائیوں کے دوران حکومت کی طرف سے لاہورمیں کوڑاکرکٹ تلف کرنے کے لئے کئی منصوبوں پر غورکیا جا چکا ہے۔لیکن کوئی منصوبہ بھی اپنی مکمل فادیت اور تکمیل کے حوالے سے قابل قبول نہیں ہو سکا۔ انہوں نے کہا کہ بعض تجارتی شاہراہوں اور پلک مقامات پر کوڑے کے ڈھیر لگ جاتے ہیں اور تعفن کی وجہ سے فضا آلودہ رہتی ہے جس سے آمدورفت میں مشکلات آتی ہیں۔ کوڑے سے بجلی بننے سے اہم مقامات سمیت مخصوص پوائنٹ سے کوڑا اٹھانے کا کام بہتر اور مستقل ہو جائے گا اور بجلی بھی تیار ہوتی رہے گی۔

مزید پڑھیں۔  سرفراز احمدبطور کپتان صرف 3 میچز میں ناکام

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں