ملائیشیا کے وزیر اعظم مہاتیر محمد نے ملک کے مالیاتی مسائل سے نمٹنے کے لیے چین سے مدد مانگ لی

ملائیشیا کے وزیر اعظم مہاتیر محمد
loading...

بیجنگ :ملائیشیا کے وزیر اعظم مہاتیر محمد نے ملک کے مالیاتی مسائل سے نمٹنے کے لیے چین سے مدد مانگ لی۔گزشتہ روز بیجنگ کے عظیم ہال میں چینی وزیراعظم لی کی چیانگ کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران مہاتیر محمد نے کہا کہ ان کے ملک کو اس وقت شدید مالی مسائل کا سامنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ سابق وزیراعظم نجیب رزاق جن پر بھاری کرپشن کے الزامات ہیں، کے دور میں چین کے ساتھ طے پانے والے 22 ارب ڈالر کے ترقیاتی و دیگر منصوبوں پر نظر ثانی کا ارادہ رکھتے ہیں جن کیلئے چینی قیادت مدد فراہم کرے۔انھوں نیملائیشیا سے مصنوعات بالخصوص ذرعی اجناس بشمول فروٹ کی درآمد میں اضافہ کرنے کے لیے رضامندی پر چینی قیادت کا شکریہ ادا کیا۔

انھوں نے توقع ظاہر کی کہ چینی قیادت اس سلسلے میں مزید تعاون کرے گی۔ذرائع ابلاغ کے مطابق ملائیشیا کو اس وقت شدید مالی مسائل کا سامنا ہے جس کی وجہ سابق وزیراعظم نجیب رزاق کی پالیسیاں اور مبینہ طور پر بدعنوانی کی شکایات ہیں۔مہاتیر محمد سابق وزیر اعظم کے دور میں چینی تعاون سے شروع ہونے والے22 ارب ڈالر مالیت کے ترقیاتی و دیگر منصوبوں پر نظر ثانی کا ارادہ رکھتے ہیں جس کے لیے انھوں نے چینی اعلیٰ قیادت سے تعاون کی درخواست کی ہے۔ انھوں نے فوری طور پر ان منصوبوں پر کام روکنے کا حکم دیا ہے ۔

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  برقع اورنقاب پر پابندی کے خلاف فیشن ویک، ماڈلز کا احتجاج

اپنا تبصرہ بھیجیں