شاہد خاقان اور خورشید کی ملاقات بے نتیجہ، نگران وزیراعظم کیلئے حکومت اور اپوزیشن میں اتفاق نہ ہوسکا

وزیراعظم
loading...

وزیر اعظم نے حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف کو راضی کرنے کے لیے مزید وقت مانگ لیا

اسلام آباد: نگران وزیراعظم کے انتخاب کیلئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کے درمیان ہونے والی ملاقات بے نتیجہ ختم ہوگئی۔منگل کو وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کی ملاقات وزیراعظم آفس اسلام آباد میں ہوئی۔

ملاقات کے دوران نگراں وزیراعظم کے ناموں پر غور کیا گیا، تاہم کسی نام پر اتفاق رائے نہ ہوسکا۔ملاقات کے بعد خورشید شاہ وزیراعظم ہاؤس سے چلے گئے اور کہا کہ نگراں وزیراعظم کے نام کے انتخاب کیلئے بدھ یا جمعرات کو وزیراعظم سے دوبارہ ملاقات ہوگی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ نواز شریف کسی سابق جج یا بیوروکریٹ کے نام پر اتفاق نہیں چاہتے اور وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے تیسری بار نواز شریف کو راضی کرنے کے لیے وقت مانگا ہے۔اس سے قبل 18 مئی کو بھی وزیراعظم کے چیمبر میں ہونے والی ملاقات کے دوران وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن لیڈر کے درمیان نگراں وزیراعظم کے نام پر مشاورت کی گئی تھی ۔

ذرائع کے مطابق نگران وزیراعظم کیلئے حکومت کے تجویز کردہ 3 ناموں میں جسٹس (ر) ناصر الملک جسٹس (ر) تصدق حسین جیلانی اور ڈاکٹر شمشاد اختر شامل ہیں۔

پاکستان پیپلز پارٹی کی طرف سے ذکاء اشرف اور جلیل عباس جیلانی کے نام سامنے آئے تاہم تحریک انصاف نے ذکاء اشرف کا نام مسترد کردیا۔

دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف نے جسٹس (ر) تصدق حسین جیلانی کا نام تجویز کیا ہے، پی ٹی آئی کی جانب سے اسٹیٹ بینک کے سابق گورنر ڈاکٹر عشرت حسین اور معروف صنعت کار عبدالرزاق داؤد کے نام بھی سامنے آچکے ہیں تاہم امریکا میں پاکستان کی مستقل مندوب ڈاکٹر ملیحہ لودھی نگراں وزیر اعظم کی دوڑ سے باہر ہو گئیں اور حکومت اور اپوزیشن کے تجویز کردہ ناموں میں ان کا نام شامل نہیں ۔

مزید پڑھیں۔  شوال کا چاند 29 رمضان کو دکھائی دیے جانے کے امکانات کم ہیں، محکمہ موسمیات

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں