بھارت کے اندرونی حالات نے قیادت کو ملاقات کی اجازت نہیں دی، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی

شاہ محمود قریشی

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ بھارت کے پیچھے ہٹنے پر افسوس ہوا، دونوں ممالک کے تصفیہ طلب مسائل کا حل بات چیت میں ہے بات چیت سے پورے خطے کو فائدہ ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے امریکا روانگی سے قبل قطر میں میڈیا سےغیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے کہا بھارت کے پیچھے ہٹنے پر افسوس ہوا، سفارت آداب کی دھجیاں اڑائی گئیں، دونوں ممالک کے تصفیہ طلب مسائل کا حل بات چیت میں ہے ، بات چیت سے پورے خطے کو فائدہ ہوگا۔

وزیرخارجہ شاہ کا کہنا تھا کہ جنرل اسمبلی اجلاس میں اقوام عالم کے سامنے مسئلہ کشمیر سمیت مختلف امور پر بھرپور طریقے سے موقف پیش کریں گے جبکہ دیگراجلاسوں اورملاقاتوں میں بھی پاکستان کا مؤقف پیش کریں گے۔

شاہ محمود قریشی نے مزید کہا مائیک پومپیوسے ملاقات باہمی تعلقات میں اہم پیش رفت ثابت ہوگی۔

اس سے قبل وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس میں شرکت کے لیے پاکستان سے امریکا روانہ ہوئے تھے۔

وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی نیوریارک روانگی کیلئے بغیر پروٹوکول اسلام آباد ائیرپورٹ پہنچے اور عام مسافروں کی طرح قطار میں لگ کربورڈنگ پاس لیا۔ اس موقع پراسلام آباد ائیر پورٹ پر موجود مسافروں نے وزیرخارجہ کےساتھ سیلفیاں بنوائیں۔

خیال رہے اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی کے اجلاس کی سائیڈ لائنز پرپاکستان اور بھارت کے وزرائے خارجہ کی ملاقات متوقع تھی لیکن بھارت نے وزرائے خارجہ کے درمیان ملاقات کی حامی بھرنے کے بعد ملاقات منسوخ کردی تھی۔

اس حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ دراصل بھارت کے اندرونی حالات نے انہیں ملاقات کی اجازت نہیں دی۔ انہوں  نے مزید کہا کہ اس سارے معاملے میں جس طرح سفارتی آداب کو روندا گیا اس کی مثال بھی نہں ملتی۔

ترجمان دفترخارجہ کے مطابق شاہ محمود قریشی واشنگٹن میں پاکستانی کمیونٹی کے پروگرام میں شرکت کریں گے جبکہ وہ واشنگٹن میں 2 دن قیام کے بعد نیویارک جائیں گے، جہاں وہ 24 ستمبرسے نیویارک میں ہونے والے اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی اجلاس میں شرکت کریں گے۔

وزیرخارجہ 26 ستمبر کو سارک وزراء خارجہ کونسل کے اجلاس میں بھی شرکت کریں گے اور 29 ستمبرکو پاکستانی وزیرخارجہ نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب کریں گے۔

دفترخارجہ کے مطابق واشنگٹن میں پاکستانی وزیرخارجہ امریکی ہم منصب مائیک پومپیو سے ملاقات کریں گے اور یہ ملاقات یکم اکتوبر کے بعد ہوگی۔

امریکی وزیرخارجہ نے پاکستانی وزیرخارجہ کو امریکا کے دورے کی دعوت دی تھی جو انہوں نے قبول کی تھی۔

(Visited 5 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں