فاسٹ بولر محمد آصف کو دبئی میں داخل ہونے سے روک دیا گیا،ائیر پورٹ سے واپس بھیج دیا

فاسٹ بولر محمد آصف
loading...

محمد آصف چند گھنٹے ایئرپورٹ پر امیگریشن حکام کی حراست میں رہنے کے بعد شارجہ میں ٹیپ بال ٹورنامنٹ کھیلے بغیر وطن واپس آگئے۔

اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا یافتہ فاسٹ بولر محمد آصف نے اپنی سزا تو پوری کرلی ہے تاہم وہ مشکلات سے باہر نہیں آ پا رہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق محمد آصف کو گذشتہ دنوں دبئی میں اْس وقت پریشانی کا سامنا کرنا پڑا جب انہیں دبئی ایئرپورٹ سے ڈی پورٹ کردیا گیا اور وہ چند گھنٹے ایئرپورٹ پر امیگریشن حکام کی حراست میں رہنے کے بعد شارجہ میں ٹیپ بال ٹورنامنٹ کھیلے بغیر وطن واپس آگئے۔

تفصیلات کے مطابق محمد آصف نے شارجہ میں ایک ٹیپ بال ٹورنامنٹ کھیلنے کا معاہدہ کیا تھا تاہم جب وہ لاہور ایئرپورٹ سے دبئی ایئرپورٹ پر اترے تو اسکیننگ کے دوران انہیں امیگریشن حکام نے دبئی میں داخلے کی اجازت نہیں دی۔ اس دوران وہ امیگریشن حکام کی حراست میں رہے اور بعدازاں انہیں ڈی پورٹ کرکے پاکستان واپس بھیج دیا گیا۔

محمد آصف ڈی پورٹ ہونے کی وجہ سے ٹورنامنٹ میں بھی شرکت نہیں کرسکے۔ میڈیا نے اس بارے میں جب محمد آصف سے رابطہ کیا تو انہوں نے ڈی پورٹ ہونے کی تصدیق کی اور بتایا کہ انہیں دبئی جانے کے لیے اسپیشل ویزہ درکار تھا اور منتظمین نے ان کا نام کلیئر کرا کر انہیں ویزہ دلایا تھا۔

محمد آصف کے مطابق جب میں دبئی پہنچا تو مجھ سے وزارت خارجہ کا لیٹر مانگا گیا ٗجو ابوظہبی سے ملنا تھا۔انہوں نے بتایا کہ میری کلیئرنس ہونے کے بعد مجھے ویزہ ملا تھا لیکن لیٹر نہ ہونے کی وجہ سے مجھے متحدہ عرب امارات میں داخل ہونے کی اجازت نہیں مل سکی۔

مزید پڑھیں۔  نواز شریف نے بے ایمانی میں پی ایچ ڈی کر رکھی ہے،ڈاکٹر یاسمین راشد

واضح رہے کہ محمد آصف 10 سال قبل آخری مرتبہ دبئی گئے تھے۔ پرانے کیس کی وجہ سے 10 سال کے دوران انہوں نے متحدہ عرب امارات کا سفر کرنے سے گریز کیا تھا۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں