جہانگیر ترین کی نظرثانی اپیل مسترد، نااہلی برقرار

سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین کی نظرثانی کی اپیل مسترد کرتے ہوئے نا اہلی برقرار رکھی ہے۔ تحریک انصاف کے مرکزی رہنماء اپیل مسترد ہونے پر پارلیمانی سیاست سے ہمیشہ کے لیے باہر ہو گئے ہیں۔

 سپریم کورٹ میں تحریک انصاف کے رہنماء جہانگیر ترین کی نااہلی کے خلاف نظرثانی اپیل پر سماعت ہوئی۔

چیف جسٹس نے وکیل سے استفسار کیا کہ کتنے ارب روپے پاکستان سے باہر لے کر گئے؟ کیا آپ کے مؤکل کو پیسہ واپس لے کر نہیں آنا چاہیئے؟ چیف جسٹس نے کہا کہ جہانگیر ترین نے پیسے بچانے کے لیے باہر کمپنی بنائی، پراپرٹی خود خریدی، بچوں کی ملکیت ظاہر کرکے چھپارہے ہیں، جہانگیر ترین سے کہا گیا دستاویزات لائیں لیکن نہیں لائے۔ کیا عوامی لیڈر ایسے ہوتے ہیں؟

جہانگیر ترین کے وکیل نے کہا کہ جہانگیرترین نےٹیکس پیڈ پیسہ باہربھیجا، شائنی ویو کے ڈائریکٹر کی لسٹ پیش کروں گا۔ شائنی ویو کمپنی جہانگیر ترین نےنہیں بنائی، جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کی ان سے سیٹلمنٹ ہوگی، سارا فراڈ ہے۔

loading...

جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہا کہ پاکستان سے بہت بڑی رقم بیرون ملک منتقل کی گئی، آپ نے یہ رقم ٹیکس ریٹرن میں ظاہر نہیں کی۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ٹرسٹ ڈیڈ کے اصل مالکان جہانگیر ترین اور انکی اہلیہ ہیں۔ اس کیس کو ازسرِنو نہیں سن سکتے۔

عدالت نے جہانگیرترین کی نظر ثانی اپیل مسترد کرتے ہوئے نااہلی برقرار رکھی، یوں تحریک انصاف کے رہنماء اپیل مسترد ہونے پر پارلیمانی سیاست سے ہمیشہ کے لیے باہر ہوگئے ہیں۔

(Visited 2 times, 1 visits today)

Comments

comments

@ImranIsmailPTI @PTIofficial @PTIMEDIA #aajkalpk #Pakistan, jahangir khan tareen,

اپنا تبصرہ بھیجیں