نیب کا شہباز شریف کے گھر پر چھاپہ، حمزہ کو گرفتار کرنے میں ناکام

حمزہ شہباز

لاہور: قومی احتساب بیورو (نیب) کی ٹیم نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی رہائش گاہ پر چھاپہ مارا تاہم کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی۔

نیب کی ٹیم شہباز شریف کی رہائش گاہ 96 ایچ ماڈل ٹاؤن پہنچی تو اس موقع پر پولیس اہلکار بھی نیب ٹیم کے ہمراہ تھے۔ نیب کے چھاپے کے وقت اپوزیشن لیڈر شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز بھی گھر میں موجود تھے۔

ذرائع کے مطابق نیب کی 8 سے 10 رکنی ٹیم نے شہباز شریف کی رہائش گاہ پر چھان بین کی اور اس موقع پر حمزہ شہباز سے سوالات کیے گئے جس کے بعد نیب ٹیم روانہ ہوگئی۔

نیب حکام کا کہنا ہے کہ نیب ٹیم کو ماڈل ٹاؤن میں لیگی کارکنان کی جانب سے مزاحمت کا سامنا رہا جب کہ نیب ٹیم کو تشدد کا نشانہ بھی بنایا گیا ہے۔

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ اپوزیشن لیڈر کی رہائش گاہ پر چھاپے کے لیے تمام قانونی تقاضے پورے کیے گئے ہیں۔

ترجمان (ن) لیگ مریم اورنگزیب نے جیو نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ نیب اتنی بے بسی کا شکار ہے کہ موجودہ حکومت اسے استعمال کر رہی ہے، الزامات وہی ہیں جو گزشتہ دو برسوں سے لگائے جارہے ہیں لیکن ایک روپے کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ نیب کو شکست ہورہی ہے کیونکہ ان کے پاس ایک روپے کی کرپشن ثابت کرنے کا ثبوت نہیں اور جب کچھ ثابت نہیں ہوتا تو آمدن سے زیادہ اثاثے ہونے کا الزام لگا دیا جاتا ہے۔

شہباز شریف اور حمزہ شہباز پر آج فرد جرم عائد نہ ہو سکی

ترجمان (ن) لیگ نے سوال کیا کہ بغیر کسی وارنٹ کے گھر میں گھسنا کونسا قانون ہے، اگر تحقیقات کرنی ہے تو کوئی قانونی کارروائی کریں نیب ڈاکے نا مارے، کیا شہباز شریف اور حمزہ شہباز دہشت گرد ہیں؟۔

ادھر وزیراعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گل کا کہنا ہے کہ نیب کرپشن کے خلاف کارروائی کر رہا ہے، نیب آزاد ادارہ ہے اور وہ خود کارروائیاں کررہا ہے، چھاپے سے حکومت پنجاب کا کوئی تعلق نہیں ہے۔

شہباز گل نے مزید کہا کہ کرپشن کے خلاف احتساب ہورہا ہے اور کئی لوگ پکڑے گئے ہیں، مزید بھی پکڑے جائیں گے، ہوسکتا ہے آنے والے دنوں میں ہماری جماعت اور دیگر جماعتوں کے لوگ بھی پکڑے جائیں۔

(Visited 15 times, 1 visits today)
loading...

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں