ورزش موٹاپے سے نجات پانے کے لیے کتنی مددگار ثابت ہو سکتی ہے؟

ورزش
Loading...

کیا آپ بڑھتے جسمانی وزن سے پریشان ہیں؟ اگر ہاں تو اس سے نجات کے لیے روزانہ ایک ہی وقت ورزش کرنا عادت بنالیں۔

یہ بات امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔

دی میریام ہاسپٹل کی تحقیق میں بتایا گیا کہ روزانہ ایک ہی وقت ورزش کرنا عادت بنالینا جسمانی وزن کو صحت مند سطح پر برقرار رکھنے میں مدد دیتا ہے۔

اس تحقیق کے دوران 375 افراد کے روزمرہ کے معمولات کا جائزہ لیا گیا اور نتائج سے معلوم ہوا کہ ایک ہی وقت ورزش کرنا ایک عادت بن جاتا ہے جس سے لوگوں کے لیے جسمانی طور پر فٹ ہونا آسان ہوجاتا ہے۔

لاکھوں افراد نے اپنی بینائی کو داؤ پر لگا دیا،مگر کیسے؟

محققین کا کہنا تھا کہ ہفتہ بھر میں ڈھائی گھنٹے کی معتدل یا سخت ورزش کرنا صحت کو بہتر بنانے کے لیے ضروری ہوتا ہے اور طویل المعیاد بنیادوں پر اس کے نتیجے میں جسمانی وزن میں کمی لانے میں مدد ملتی ہے۔

اس سے پہلے ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ ایک مخصوص وقت سے پہلے ناشتہ کرلینا موٹاپے سے بچانے بلکہ اس سے نجات کے لیے مددگار ثابت ہوتا ہے۔

Loading...

تل ابیب یونیورسٹی اور ہیبرو یونیورسٹی کی مشترکہ تحقیق میں بتایا گیا کہ ناشتہ نہ کرنے کی عادت نہ صرف موٹاپے بلکہ مختلف امراض جیسے ذیابیطس ٹائپ ٹو، بلڈ پریشر اور امراض قلب وغیرہ کا خطرہ بڑھاتی ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ ناشتہ کرنے سے کھانے کے بعد کے گلوکوز اور انسولین کے ردعمل کو ریگولیٹ کرنے میں مدد ملتی ہے جبکہ گلیسمیک کنٹرول بہتر ہوتا ہے۔

تحقیق کے مطابق صبح ساڑھے 9 بجے سے پہلے ناشتہ کرنا میٹابولزم ریٹ کو بہتر کرکے جسمانی وزن میں کمی میں مدد دیتا ہے۔

محققین کا کہنا تھا کہ ناشتہ نہ کرنا نہ صرف میٹابولزم کو متاثر کرتا ہے بلکہ جسمانی سستی کا باعث بھی بنتا ہے کیونکہ دماغ کو اپنے افعال کے لیے ایندھن کی ضرورت ہوتی ہے اور ناشتہ نہ کرنے پر وہ دن کے کسی بھی حصے میں کسی بھی چیز کی خواہش کرنے لگتا ہے، جس سے طویل المعیاد بنیادوں پر وزن بڑھتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اچھا ناشتہ کاربوہائیڈریٹس اور پروٹین پر مشتمل ہوتا ہے جو بے وقت کھانے کی خواہش کو کم کرنے کے لیے ساتھ بسیار خوری کو کنٹرول کرنے میں مدد دیتا ہے۔

(Visited 32 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں