وزیراعلی عثمان بزدار نے 55 ارب کے 131 ترقیاتی منصوبے شروع کیے! لیکن کہاں …..؟

عثمان بزدار
Loading...

لاہور: وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کے حکم پر ان کے آبائی ضلع ڈیر ہ غازی خان میں مختلف شعبہ جات میں55 ارب کے 131 ترقیاتی منصوبوں پر کام شروع ہوچکا ہے ۔ منصوبوں کی تکمیل کے لئے ایوان وزیر اعلی ،چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیاتی بورڈ اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب بھر پور طریقے سے متحرک ہیں۔

ترقیاتی سکیموں میں سے 57 منصوبے سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل ہیں جبکہ باقی کے لئے ضمنی بجٹ جاری کیا جائے گا۔ ماضی میں کسی بھی وزیر اعلی نے کسی بھی ضلع کے لئے اتنا بڑے ترقیاتی پیکج کا اعلان نہیں کیا۔ وزیر اعظم بھی اپنے آبائی ضلع میانیوالی کے لئے اتنا بڑے ترقیاتی پیکج کا اعلان نہیں کرسکے ۔ ان سکیموں کی تکمیل میں وزیر اعلی پنجاب کے معتمد خاص طور خان بزدار، طاہر بزدار،بھائی جعفر بزدار،بھانجا اسدخاں بزدار اور ماموں ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب سردار اعجاز احمد جعفر مرکزی کردار ادا کررہے ہیں۔

پنجاب حکومت کے ایک سینئر اہلکار کے مطابق منصوبہ جات کی کل لاگت کا 14 سے 18 فیصد کمیشن کی مد میں افسران و سیاسی رہنمائوں کو جارہا ہے ۔ بڑی منصوبہ جات محکمہ مواصلات و تعمیرات، ہاؤسنگ ، اربن اینڈ کمیونٹی ڈویلپمنٹ اور لوکل گورنمنٹ، صحت، آبپاشی اور تعلیم کی ہیں۔وزیر اعلی کے پیکج میں کچھ ایسے منصوبے بھی ہیں جن کی متعلقہ محکموں اور اتھارٹیوں نے مخالفت کی لیکن وزیر اعلی پنجاب بضد ہیں کہ ان کو مکمل کیا جائے ۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعلی نے ابتدائی طور پر اپنے ضلع کے تین روزہ دورے میں مختلف شعبہ جات کی 95 ترقیاتی سکیموں کا اعلان کیا جن میں سے 45 ڈی جی خان، 20 برھتی قصبہ اور 30 تحصیل تونسہ شریف کی ہیں۔

منصوبہ جات میں سے مظفرگڑھ سے ڈی جی خان تک تین ارب سے سڑک کی تعمیر، ڈی جی خان کے لئے 10 اربن بسوں کی فراہمی، دو لاکھ خاندانوں کے لئے انصاف صحت کارڈ کا اجرا، سٹیڈیم کا قیام، 62 کروڑ سے ڈی ایچ کیو ڈی جی خان کی اپ گریڈیشن ،تین عدد میٹرنٹی ایمبولنسز کی فراہمی،رورل ہیلتھ سنٹر شاہدن کی اپ گریڈیشن، غازی میڈیکل کالج میں خواتین طلباء کے لئے سیٹوں میں اضافہ، قبائلی علاقے کے طلبا ء کے لئے لاہور کی سرکاری یونیورسٹیز میں ایک ایک سیٹ کی منظوری، 2 ارب 50 کروڑ کی لاگت سے غازی یونیورسٹی کے کیمپس کا قیام، ڈی جی خان کے طلباء کو سفری سہولت فراہم کرنے کے لئے 12 نئی بسوں کی فراہمی، ڈی جی خان کالج کے لئے 20 کروڑ سے فرنیچر، آئی ٹی آلات اور کتابوں کی فراہمی، شہر کے داخلی و خارجی راستوں کی تزئین و آرائش، تمام سڑکوں کی تعمیر نو و مرمت، بچوں کے لئے پانچ نئے سکول اور کھیل کے میدان، صاف پانی کی فراہمی، سیوریج کی تعمیر، 5 کروڑ سے ہاکی سٹیڈیم میں آسٹوٹرف بچھانے ، اراضی سنٹر کے قیام، فورٹ منرو پارک کی تزئین وآرائش، 3 ارب 50 کروڑ سے بستی بذدار سے تونسہ بائی پاس کی تعمیر، 35 کروڑ سے ووکیشنل سنٹر کا قیام، تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں سی ٹی سکین مشین کی فراہمی،انسداد دہشت گردی بلڈنگ کی تعمیر، رولر ہیلتھ سنٹرز کا قیام، پانچ پرائمری سکولوں کا قیام اور پانچ بنک اف پنجاب کی نئی برانچیں کھولنے کا حکم دیا ہے ۔ وزیر اعلی پنجاب نے اپنے ضلع کے لئے 7ارب 70کروڑ کی خصوصی گرانٹ سے مختلف سیکٹرز میں ترقیاتی سکیمیں شروع کرائیں۔

25ارب لوکل گورنمنٹ،ہائی ویز، صحت، ایجوکیشن، پبلک ہیلتھ، محکمہ تعمیرات اور میونسپل کارپوریشن تونسہ کی ترقیاتی سیکمیوں کو سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل کیا گیا ۔ میر چاکر خان رند یونیورسٹی 10کروڑ کی لاگت سے بنائی جارہی ہے ۔ ایک ارب 70کروڑ کی لاگت سے غازی یونیورسٹی بھی قائم کی جارہی ہے جبکہ پانی کو محفوظ کرنے کے لئے چار چھوٹے ڈیم بھی تعمیر کئے جارہے ہیں۔

پنجاب حکومت نے موجودہ مالی سال میں صوبہ بھر میں ترقیاتی کاموں کے لئے 350ارب کا کل بجٹ پیش کیا جس میں سے محکمہ منصوبہ بندی و ترقیات نے اکتوبر تک 136 ارب کے فنڈز جاری کرنے کی منظوری دی ہے جس پر محکمہ خزانہ نے 128 ارب کے فنڈز جاری کردیے ہیں جو کل فنڈز کا 36 فیصد بنتا ہے جبکہ ڈی جی خان کی ترقیاتی سیکیموں کے لئے فنڈز کا اجراء 65 فی صد سے بھی زائد ہے ۔ وزیر اعلی اپنے آبائی تحصیل تونسہ شریف میں روزگار کی فراہمی اور عوام کی معاشی بہتری کے لئے 400کنال پر سمال انڈسٹریل اسٹیٹ بنانے پربضدہیں جبکہ سرکاری محکموں نے تجویز کو ناقابل عمل قراردیا۔

Loading...

سابق صدر ڈی جی خان چیمبرنے بتایا وزیر اعلی کی خواہش پر ترقیاتی بجٹ میں 10کروڑ کے اخراجات ڈالے گئے جبکہ مزید 20کروڑ روپے کے اخراجات آئیں گے ۔ اخوت فاؤنڈیشن نے تونسہ شریف میں وزیر اعلی پنجاب کے حکم پر ایک سال میں 1895افراد کو 4 کروڑ 78 لاکھ کے قرضے دیئے ۔پنجاب سمال انڈسٹریز نے تونسہ کے 144 افراد کو 2لاکھ تک بلا سود قرضے دیئے جن کی مالیت ایک کروڑ 50لاکھ ہے ۔

ناجائز حکمرانوں کو جانا ہوگا اس سے کم پر بات نہیں ہوگی ،مولانا فضل الرحمان

تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال تونسہ وزیر اعلی پنجاب نے حکم دیا کہ مریضوں کو صحت کی بہتر سہولیات فراہم کی جائیں جس پر ایم ایس نے چھ ماہ میں 2کروڑ 45لاکھ کی دوائیاں لوکل پرچیز کیں ۔ہسپتال کے ایک سینئر اہلکار نے بتایا کہ ادویات کے بجٹ کا 25فی صد لوکل پرچیز کیا جاسکتا ہے۔ تونسہ میں تعینات ایک سینئر افسر نے بتایا طور خان بزدار جو محکمہ لائیو سٹاک کا ریٹائرڈ اہلکار ہے ، بزدار فیملی کا پرانا سیاسی منشی ہے اورآج کل ڈی جی خان میں تمام سول و پولیس و دیگر محکمے جو ترقیاتی کام کرتے ہیں ان کے زیر اثر ہیں ۔عمر بزدار جو وزیر اعلی کے بھائی ہیں اور بارڈ رملٹری پولیس میں جمع دار تھے کو بھی نئی اسامی پیدا کرکے بطوررسال دار گریڈ 17میں ترقی دی گئی ہے ۔

دوسرا بھائی جعفر بزدار جو سابق یونین کونسل ناظم ہے کے ڈیرے پر ٹھیکوں کے فیصلے طور خان بزدار کی موجودگی اور سفارش پر ہوتے ہیں۔ ایوان وزیر اعلی میں اسد بزدار جو وزیر اعلی کا بھانجا ہے تمام ترقیاتی کاموں کے علاوہ صوبے کے انتظامی امور دیکھتے ہیں اور7کلب کی انیکسی میں بیٹھتے ہیں۔ چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیاتی بورڈ اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب سردار اعجاز احمد خان جعفر جو وزیر اعلی کے سگے ماموں ہیں،روزانہ کی بنا پر ان کی پرفارمنس رپورٹ لیتے ہیں۔ پنجاب حکومت نے ایک سینئر اہلکار نے بتایا پنجاب حکومت کے پاس ترقیاتی فنڈز کی تقسیم کا کوئی فارمولہ نہیں بلکہ اس کی تقسیم وزیر اعلی اور اس کی کابینہ کا صوابدیدی اختیار ہے جس کی وجہ سے من پسند اضلاع کو نوازنا کوئی مشکل کام نہیں ۔

صوبائی وزیر اطلاعات میاں اسلم اقبال نے کہاماضی میں جنوبی پنجاب کو نظر انداز کیا گیا،55ارب کی بات ٹھیک نہیں ۔ لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)تحریک انصاف کے رہنما فیصل جاوید نے کہا ہے ہمارے دھرنے اوراس مارچ میں زمین و آسمان کا فرق ہے ،وہ بالکل ٹھیک تھا،ہم ایسے ہی نہیں نکل آئیتھے ، ہم نے چار حلقوں کے کھولنے کی بات کی، جب کہیں سے بھی انصاف نہیں ملا تو پھر دھرنا دیا، ان کا تو مقصد ہی نظر نہیں آرہا۔پروگرام نائٹ ایڈیشن میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا امید ہے بات چیت سے آئندہ چوبیس گھنٹوں میں معاملات طے پاجائیں گے ۔

جے یو آئی (ف) کے رہنما مولانا عبدالواسع نے کہا کہ میرے خیال میں حکومتی مذاکراتی کمیٹی برائے نام ہے ، ہمارے مطالبات تو واضح ہیں، حکومت نے ابھی تک غورنہیں کیا، اس لئے بات نہیں بن رہی ۔اینکرنے پروگرام میں کہا وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اقربا پروری کرتے ہوئے تحریک انصاف کے منشورمیں ڈنٹ ڈال رہے ہیں۔ عثمان بزدار اپنے ضلع میں چارسو کنال پر انڈسٹریل سٹیٹ بنانا چاہتے ہیں لیکن متعلقہ محکمہ نے منع کیا ہے ۔

وزیر اطلاعات پنجاب میاں اسلم اقبال نے کہا پہلے تو آپ نے یہ ثابت کرنا ہے کہ واقعی ڈی جی خان میں 55 ارب روپے کی تفصیل موجودہے ،میں متعلقہ منسٹرہوں ہمیں پتہ ہے ہم نے وہاں پر انڈسٹریل اسٹیٹ بنانی ہے ،آ پ سے پوچھ کرنہیں بنانی ، اچھی گورننس یہ ہوتی ہے کہ دوسرے ادارو ں سے بھی فیڈ بیک لے کرکام شروع کرایا جائے ، اربن ڈویلپمنٹ نے منع کیا تو ہم نے منصوبہ موخرکردیا۔ماہرقانون راجہ عامرعباس نے کہا ماسوائے ہارڈشپ کیسز کے عدالتیں ضمانت نہیں دینگی۔ن لیگ کے رہنما خرم دستگیر نے کہا مریم نواز کی ضمانت انسانی ہمدردی کی بنیاد پرنہیں بلکہ میرٹ پردی گئی ، مریم کی پہلی ترجیح اپنے والد کی صحت پرتوجہ دینا ہے ۔

(Visited 132 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں