مقبوضہ کشمیر میں مظالم، کینیڈا کا بھارتی فوجیوں کو ویزہ دینے سے انکار کر دیا

اوٹاوا: مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم کے بعد کینیڈا نے سابق بھارتی فوجی افسران کو ویزہ دینے سے صاف انکار کردیا۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارت کے دو سابق لیفٹیننٹ جنرلز، تین سابق بریگیڈیئرز اور دو انٹیلی جنس افسران نے کینیڈا کا ویزہ حاصل کرنے کے لیے درخواست دائر کی۔

کینڈین امیگریشن حکام نے تمام افسران کو ویزہ دینے سے صاف انکار کرتے ہوئے دو ٹوک مؤقف اختیار کیا کہ ’’تمام درخواست گزار مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم میں ملوث رہے، حکومت ایسے ظالموں کو ویزہ فراہم نہیں کرسکتی لہذا سابق بھارتی فوجیوں کی درخواستیں مسترد کی جارہی ہیں‘‘۔

غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق مذکورہ افسران متعدد بار کینیڈا کا دورہ کر کے آچکے ہیں اور اب انہوں نے مستقل سکونت کے لیے درخواستیں دائر کیں تھیں تاکہ وہ بقیہ زندگی وہی پر گزار سکیں۔

مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پرسیکورٹی کونسل کا اجلاس بلانے کے لیے تمام 15 ممالک متفق

یاد رہے کہ کینیڈا کی حکومت غیر ملکیوں اور بالخصوص مہاجرین کو سکونت دینے کے حوالے سے خاصہ کردار ادا کرتی ہے، شام سمیت دیگر ممالک کے مہاجرین کو جب تمام ممالک نے اپنی سرحد میں داخل ہونے سے روک دیا تھا تو اُس وقت جسٹن ٹروڈو نے مہاجرین کے لیے اپنی سرحدیں کھولنے کا اعلان کیا تھا۔

Leave a Reply