پاکستان میں 5 جی ٹیکنالوجی لانے کا اعلان

جیسا کہ امریکہ اور جنوبی کوریا میں 5 جی ٹیکنالوجی کو متعارف کروادیا گیا ہے ۔ یہ 5 جی ٹیکنالوجی جسے ففتھ جنریشن ٹیکنالوجی کہتے ہیں اب پاکستان میں کب لانچ ہو گی اور وہ بھی کم قیمت پر۔

https://aajkal.com.pk/wp-admin/edit.php

اس کا جواب چین کی کمپنی ہواوے کے پاس ہے جو جنوبی ایشیائی ممالک میں کم قیمت پر 5 جی ٹیکنالوجی متعارف کروانا چاہتی ہے، اس کمپنی کو امریکہ اور یورپ میں اپنا نیٹ ورک قائم کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔

فائل فوٹو

کیونکہ امریکہ کی طرف سے ہواوے کمپنی کو چائینہ کا جاسوس قرار دے کر اسے کام کرے نہیں دیا جا رہا اور اسے فائیو جی ٹیکنالوجی کے نیٹ ورکس کو قائم کرنے میں مشکلات  اور رکاوٹوں کو حائل کیا جا رہاہے۔

اس کے نتیجے میں ہواوے نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ وہ اپنی ٹیکنالوجی کو ایشیائی ممالک میں پھیلائے گی جہاں پاکستان، بنگلہ دیش اور سری لنکا میں اس کمپنی کی حالت بہت اچھی ہے ۔ یہ کمپنی بھارتی تحفظات دور کرنے کے لیے بھی کوشیش کر رہی ہے اور رواں سال کے  آخر میں بھارت میں 5 جی ٹیکنالوجی کا استعمال شروع ہو جائے گا۔

مزید اس ٹیکنالوجی کے بارے میں جنوبی ایشیائی علاقوں میں ہواوے کے ترجمان نے کہا کہ  سیاست نہیں بس ڈیجیٹل ، یہ وہ انتخاب ہے جس میں تمام اسٹیک ہولڈرز کا فائدہ ہے ۔ اور ہم اس کے ٹرائل مکمل کرنے کی کوشیش کریں گے اور اس ٹیکنالوجی کو آگے بڑھانے کے لیے انڈسٹری کے شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

رپورٹ کے مطابق پاکستان اور بھارت میں اس ٹیکنالوجی کوکمرشل بنیادوں پر اگلے سال کی دوسری ششماہی کے دوران متعارف کروانے کے خواہشمند ہیں جبکہ بنگلہ دیش میں اس سروس کو 2021  تک ممکن بنایا جائے گا۔

واضح رہے کہ جنوبی ایشیائی ممالک میں آبادی کا 25 فیصد حصہ رہتا ہے اور یہاں موبائل فون استعمال کرنے کی شرح 2025  تک 61 فیصد تک پہنچنے کا امکان ہے ، اسی وجہ سے ہواوے جیسی کمپنی کے لیے یہ علاقہ سونے کی کان سے کم نہیں۔

رپورٹ میں پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن کے اعلیٰ عہدیدار کے بارے میں بتایا کہ ہواوے پہلے سے ہی پاکستان میں اپنے قدم جمانے میں کامیاب ہو گئی ہے اور اب اس کے لیے یہ بہت آسان ہے کہ وہ اپنی فائیو جی ٹیکنالوجی کو پاکستان میں باآسانی متعارف کروائے۔

اس تمام کام میں ہواوے کے لیے مشکل بھی ہو گی وہ یہ کے جنوبی ایشیائی ممالک میں اس ٹیکنالوجی کو سستے داموں صارفین تک پہنچانہ کیونکہ یہ سروس مہنگی ہے تو اس کا استعمال بھی مہنگا ہو گا۔

پاکستان کی ٹاپ لائن سیکیورٹی انویسڑز ایڈوائزری کے سربراہ محمد سہیل کے مطابق پاکستان میں اس وقت انٹرنیٹ ڈیٹا چارجز دیگر ترقی پزیر ممالک سے کہیں ذیادہ ہیں، اور فائیو جی کے آنے سے قیمتیں اور بڑھ جائیں گی۔

یہ فائیو جی ٹیکنالوجی موجودہ موبائل فونز نیٹ ورکس سے سو گنا جبکہ گھروں کے براڈ بینڈ کنکشنز سے دس گنا تیز ہو گا۔ مزید اس ٹیکنالوجی سے ڈھائی سے تین گھنٹے کی فلم محض ایک سیکنڈ میں ڈاؤن لوڈ کی جاسکے گی۔

اس ٹیکنالوجی کو جدید دنیا میں انقلاب قرار دیا جارہا ہے ۔

(Visited 45 times, 1 visits today)
loading...

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں