پولیو اور عالمی سفر کی بندش

پولیو

ایک خبر کے مطابق عالمی ادارہ صحت نے پاکستان پر عالمی سفری پابندیوں میں توسیع کا اعلان کرتے ہوئے پولیو وائرس کا پھیلا ؤعالمی صحتِ عامہ کے لیے بدستور خطرہ قرار دیا ہے،البتہ پاکستان کی انسداد پولیو کے لیے جاری کوششوں کو سراہا بھی گیا ہے۔

یہ پابندی عالمی سطح پر پاکستان کے حوالے سے منفی تاثر کو گہرا کرنے کا باعث ہے۔ یہ بات نہایت تشویشناک ہے کہ سال بھر میں بچوں کو متعدد بار پولیو ویکسین پلائے جانے کے باوجود اب تک اس بیماری سے مکمل طور پر نجات حاصل نہیں کی جا سکی۔ حیرت انگیز بات یہ ہے کہ زیادہ تر کیسز لاہور پشاور جیسے میٹروپولیٹن شہروں سے سامنے آتے ہیں۔

loading...

فواد خان کے خلاف پولیو کے قطرے نہ پلوانے پرمقدمہ درج

اس کی وجوہ تلاش کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ واضح ہے کہ کہیں نہ کہیں کوئی ایسا سقم ضرور موجود ہے جس کی وجہ سے کچھ بچے پولیو ویکسین نہیں پی پاتے اور نتیجتا اس مرض کا شکار ہو جاتے ہیں کیونکہ یہ طے ہے کہ جو بچہ ویکسین پی لے اسے یہ بیماری لاحق ہونے کا اندیشہ صفر ہو جاتا ہے۔ ضروری ہے کہ پولیو ویکسی نیشن کے پروگرام کو مزید منظم مرتب اور مربوط کیا جائے تاکہ پاکستان کو پولیو فری بنایا جا سکے کیونکہ پولیو کی وجہ سے عالمی سفر پر پابندیاں عائد ہونے سے ہماری بہتری کی جانب گامزن معیشت کا گراف ایک بار پھر نیچے کی طرف جا سکتا ہے۔

(Visited 1 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں