مشرف کیس پر اثرانداز ہونے کا الزام بے بنیاد ہے، چیف جسٹس

چیف جسٹس

اسلام آباد: چیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ نے کہا ہے کہ ایڈیشنل اٹارنی جنرل کا مشرف کیس پر اثرانداز ہونے کا الزام بے بنیاد ہے۔

تاثر دیا گیا میں نے پرویز مشرف کیس فیصلے کی حمایت کی، میرے اور عدلیہ کے خلاف گھناؤنی مہم شروع ہوچکی، ہمیں اپنی حدود کا علم ہے، سچ کا ہمیشہ بول بالا ہوگا۔ فل کورٹ ریفرنس سے چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا جج کو غیر جانبدار ہونے کے ساتھ دل سے شیر ہونا چاہیئے، ایڈیشنل اٹارنی جنرل کی تقریر میں مجھ پر میڈیا سے بات کرنے کا کہا گیا۔

اٹارنی جنرل نے کہا میں مشرف کے کیس پر اثرانداز ہوا، مجھ پر عائد الزام بے بنیاد اور غلط ہے، میں نے ہمیشہ وہ کیا جو درست سمجھا، میرے لیے یہ اہم نہیں کہ دوسروں کا ردعمل یا نتائج کیا ہوسکتے ہیں۔

جج وقار احمد سیٹھ کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس آج دائر ہونے کا امکان

چیف جسٹس پاکستان کا کہنا تھا میری اپروچ کو فہمیدہ ریاض کی نظم میں خوبصورتی سے سمویا گیا، چھٹیاں نکال کر 235 دن منصب پر فائز رہا، کچھ  لوگ تمہیں سمجھائیں گے، وہ تم کو خوف دلائیں گے، میرے نزدیک جج کو بے خوف و خطر ہونا چاہیئے، جج کا دل شیر اور اعصاب فولاد کی طرح ہونے چاہئیں۔

(Visited 37 times, 1 visits today)

Comments

comments

چیف جسٹس,

اپنا تبصرہ بھیجیں