عشق کہانی

حاملہ خاتون

ایک حاملہ خاتون نے اپنے شوہر سے پوچھا ! ہم اگلے دو مہینوں میں ماں باپ بننے والے ہیں، بولی اگر بیٹا ہوا، تو کیا منصوبہ ہوگا ؟

شوہر نے جواب دیا ! میں اُس کو تمام روزمرہ زندگی کی روایات سکھاؤں گا، کھیل، ریاضی، لوگوں کی عزت اور وغیرہ وغیرہ حاملہ خاتون نے پھر پوچھا، اگر بیٹی ہوئی تو؟ شوہر نے جواب دیا، میں اُسے کچھ نہیں سکھاؤں گا، بلکہ میں اُس سے خود سیکھوں گا.

پیدائش سے قبل بچے کی ریڑھ کی ہڈی کا نقص آپریشن کے ذریعےدور کر دیا

میں غیرمشروط محبت سیکھوں گا، میری بیٹی یہ کوشش کرے گی کہ وہ میری پرورش اپنے ایک مخصوص زاویہ نگاہ سے کرے، بالوں کی کنگھی کرنے سے لےکر ڈریسنگ سینس، ابتداءِ گفتگو سے لےکر انتہاءِ گفتگو تک نیز کہ وہ میرے ہر کام کو اپنی زاویہ نگاہ سے تربیت کرے گی. وہ میرے لئے دوسروں سے لڑے گی، مباحثہ کرے گی، اُس کی خوشی اور غم میری طبیعت پہ منحصر ہوں گی.

حاملہ خاتون نے پھر پوچھا ! کیا بیٹا یہ سب کچھ نہیں سکھائے گا آپ کو؟

شوہر نے جواب دیا ! بیٹے میں یہ ساری خصوصیات ڈالی جاتی ہے، لیکن بیٹی اِن خصوصیات کیساتھ پیدا ہوتی ہے.

حاملہ خاتون نے پوچھا ! لیکن بیٹی تو ہمارے ساتھ ہمیشہ نہیں رہے گی؟

شوہر نے جواب دیا ! بیٹی ہمارے ساتھ جسمانی طور پر نہیں رہے گی، لیکن روحانی طور پر وہ ہر لمحہ ہمارے ساتھ ہوگی. یہ بات کہہ کر شوہر نے اپنے مکالمے کو ختم کیا کہ بیٹی کے ساتھ بندھن ختم نہیں ہوتا، لیکن بیٹا زندگی کے کسی بھی موڑ پہ ہمیں چھوڑ سکتا ہے..!

(Visited 22 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں