تمبا کو نوشی اور سرطا ن

کیا آپ تمبا کو نوشی کے نقصانات جانتے ہیں اگر نہیں تو اب جان لیں کہ یہ آپکی صحت کے لیے کتنے خطرناک ہیں۔

انسان کے جسم میں تقریبا تین ارب خلیات ہوتے ہیں۔ صحت مند انسان میں نئے خلیے صرف اس صورت میں تقسیم ہو کر اپنی تعداد بڑھا تے ہیں،جب کسی چوٹ یا ضرب کی بنا ء پر ان میں سے کچھ ضائع ہو جائیں ،جیسے ہی ان کی تعداد پوری ہو جاتی ہیان کی تقسیم اور تعداد کا بڑھنے کا عمل رک جاتا ہے ۔کینسر یا سرطا ن خلیوں کے بننے کے اس فطری عمل میں تبدیلی لاتا ہے اور خلیوں کے تعداد میں مسلسل اضا فہ کرتا رہتا ہے۔  اکثرحالات میں کینسر پھیلنے کا ابتدائی عمل خاموشی سے جاری رہتا ہے۔ صحت مند جسم کے ا ندر خلیات مضبوطی سے آپس میں جوڑے ہوتے ہیں، لیکن کینسر کی صورت میں وہ ایک دوسرے سے ٹوٹ کر الگ ہونا شروع ہو جاتے ہیں اور خون کی رگو میں داخل ہو کر جسم کے کسی بھی حصے میں داخل ہو جاتے ہیں۔

چھو ٹے خلیا ت و الے کینسر:

تقریباً 20 فیصد مریض چھوٹے خلیات کینسر کا شکار ہوتے ہیں ۔یہ کینسر بڑی سرعت سے جلدی لمفاوی گلٹیوں اور دماغ میں پھل جاتی ہے۔

بڑے خلیا ت کا کینسر:

یہ کینسر کی عام قسم ہے۔زیادہ تر مر یض اسی کا شکار ہو تے ہیں۔تمبا کو نو ش افراد 45 سال بعد ان دو نو ں ا قسام کے کینسر شکار ہو سکتے ہیں۔

علامات:

عام طو ر پر ا بتداء میں کینسرکی کو ئی علا ما ت ظا ہر نہیں ہو تی؛لیکن و قت گزرنے کے سا تھ اس کی جوعلا ما ت ظا ہرہو تی ہیں ،وہ درج ذیل ہیں:

۔کھا نسی مسلسل ر ہنا.

۔سینے میں درد.

۔سانس کی تکلیف.

۔سینے میں خرخراہٹ کی آواز.

۔مر یض ا کثر و بیشتر نمو نیہ اور برو نکا ئیٹس کا شکار رہتا ہے.

۔کھا نسی کے ساتھ بلغم میں خون آنا.

۔چہرے پر سوجن.

۔وزن میں کمی اور نقاہت میں ا ضافہ.

دل کی بیماریاں

تمباکو میں شامل نکوٹین خون میں شامل ہوکردل کے امراض کا باعث بنتا ہے۔مثلاً دل کی دھڑکن بڑھنے اور بلڈپریشر میں مسلسل اضافے سے پیچیدگیاں جنم لیتی ہیں،جودل کے دورے کی صورت اختیار کر سکتا ہے۔

دانت اور مسوڑھوں کے امراض

تمبا کواور نسوارکااستعمال چہرے کی رنگت خراب کر کے داغ دار کرتا ہے، بلکہ دانتوں کو بھی نقصان پہنچاتاہے۔تمبا کوکی وجہ سے دانتوں کی حفاظتی تہہ اینیمل اتر جاتی ہے اور دنت اپنی جگہ چھوڑنے لگتے ہیں اس کہ علاوہ دانتوں میں ٹھنڈا گرام لگنے کی بھی شکا یت پیدا ہوجاتی ہے اور کیڑا لگنے کے امکانات بھی بڑھ جاتے ہیں۔

منہ کے اندر اگر درج ذیل میں سے کو ئی علامت پیدا ہو تو اسے خطرے کی گھنٹی سمجھئے:

۔منہ میں چھالہ جس کو چھونے سے خون جاری ہوجائے.

۔ منہ یا گردن میں کسی مقام پر گٹلی محسوس ہونا.

۔منہ کے کسی حصہ میں درد یا سو جن، جو مسلسل بر قرار رہے.

۔چبانے یا زبان کے ہلانے سے تکلیف ہو نا.

۔جبڑا ہلانے سے شدید تکلیف ہو نا.

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں