شکی شوہر اور دھوکے باز بیوی

Loading...

پڑوسن کی بات سن کر وہ تذبذب کاشکار ہوگیا کہ آخر وہ کون لوگ ہیں جس کا ذکراس کی بیوی نے کبھی نہیں کیا۔ یا پھر یہ مجھے گمراہ کرنے کی کوشش کررہی ہیں۔ اس نے پڑوسن سے اجازت طلب کی،

” سنو اس بات کا ذکر اپنی بیوی سے نہ کرنا کہ میں نے یہ سب بتایا ہے۔ بہتر ہے کہ تم خود کسی دن دفتر کے اوقات میں بنابتائے گھر جاؤ اور حالات کا جائزہ لو۔ “ پڑوسن نے اسے رخصت کرتے ہوئے کہا۔

اب اس کا دماغ سُن ہوگیا تھا، وہ تانے بانے بننا شروع ہوگیا مگر اسے کچھ سمجھ نہ آیا۔ اگلے دن صبح وہ جلدی گھر سے نکل گیا۔ اسے سمجھ نہیں آرہا تھا کہ وہ اپنی بیوی پہ شک کر رہا ہے جو اس کا اتنا خیال رکھتی ہے، جو اس کی بیٹی کی ماں ہے۔ اس نے خود کو کوسا مگر اس کو پڑوسن کی بات بھی ستا رہی تھی۔ دفتر میں بھی اس کا کام میں دل نہیں لگ رہا تھا، اسی کشمکش میں اس نے گھر کا رخ کرلیا۔ وہ غیر ارادی طور پر گھر کے راستے پہ تھا۔

چابی اس کے پاس ہوتی تھی مگر آج وہ مقررہ وقت سے پہلے گھر آگیا تھا۔ گھر میں داخل ہوتے ہی اس کی نظر ساس پر پڑی جو ڈرائنگ روم میں اس کی بیٹی کے ساتھ کھیل رہی تھی، لیکن کمرے میں داخل ہوتے ہی بیوی کو انجان آدمی کے ساتھ دیکھ کر وہ ششدر رہ گیا۔ وہ ابھی اسی گومگو کی کیفیت میں تھا کہ اس آدمی نے اس کو خوب مارا اور گھر سے فرار ہوگیا۔ ساس نے فوراً بیٹے کو فون کرکے بلایا اور سالے نے بھی اس کی خوب دھلائی کی جس سے اس کا سر پھٹ گیا۔ محلہ کے لوگ اسے ہسپتال لے گئے۔ زخم گہرے تھے مگر دل اور روح پہ لگے زخم سے کم ہی تھے۔

بعد ازاں بیوی کے بارے میں اس کے پرانے محلے سے پتہ چلا کہ وہ اور اس کی دیگر 6 بہنیں اپنی ماں کے ساتھ مل کر برسوں سے اس غلیظ پیشے سے وابستہ ہیں۔ اور محلہ کا بچہ بچہ ان کی حقیقت جانتا تھا۔ یہ سب اس کے لیے باعثِ خفت تھا کہ ایک دم اس کے ذہن میں بہن کی صدا آئی،

Loading...

نیو یارک میں پاکستانی ہوٹل جہاں پاکستانی حکمران نہیں ٹھرتے تھے !

”چاند جیسی بھابھی لاؤں گی گڈو! جو تیرے قابل ہوگی۔ “

بیشک اللہ کی لاٹھی بے آواز ہوتی ہے۔ خود کو برتر اور دوسرے کو کمتر سمجھنے کا انجام دنیا میں ہی مل جاتا ہے۔ جو دوسروں کو تکلیف پہنچاتا ہے، اللہ اس کو تکلیف پہنچاتا ہے اور اللہ کی ضرب بندے کے وار سے بہت بھاری پڑتی ہے۔ ہمیں تو زمین پہ بھی اکڑ کے چلنے کا حکم نہیں۔ بلاشبہ زمین پر خدا بننے والوں کا اور ان کی آل کا انجام ذلت و رسوائی ہے۔

بیشک سورہ نور میں اللہ تعالیٰ فرماتا ہے :

”خبیث عورتیں خبیث مردوں کے لیے ہیں اور

اور پاکیزہ عورتیں پاکیزہ مردوں کے لیے۔ ”

(Visited 119 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں