ٹی بیگ والی چائے پینے والے ہوجائیں ہوشیار !

Loading...

آپ یہ سوچ بھی نہیں سکتے کہ چائے کے صرف ایک کپ پلاسٹک کے چھوٹے چھوٹے ذرات سے بھرا ہوا ہوسکتا ہے۔

چائے پوری دنیا میں سب سے زیادہ پیا جانے والا پسندیدہ مشروب ہے اور بیشتر افراد اسے بنانے کے لیے ٹی بیگ کا استعمال کرتے ہیں۔ یہ ٹی بیگ پتی اور پیپر کے بنے ہوئے ہوتے ہیں۔

ایک ریسرچ میں اس بات کا دعویٰ کیا گیا ہے کہ ان ٹی بیگز میں 96 فیصد پولی پروپیلین (ایک بے رنگ شفاف حرارتی پلاسٹک مادہ) ہوتا ہے جو ان کو سیل کرنے اور شکل برقرار رکھنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

کینیڈا کی یونیورسٹی میں کی جانے والی تحقیق کے دوران یہ جاننے کی کوشش کی گئی کہ کیا ٹی بیگز سے پلاسٹک کے چھوٹے چھوٹے ذرات چائے میں شامل ہوتے ہیں یا نہیں۔

Loading...
Photo: File

ریسرچر یہ بات بھی معلوم کرنا چاہتے تھے کہ پلاسٹک کے یہ چھوٹے ذرات انسان کی صحت کے لیے خطرناک تو نہیں؟ اس مقصد کے لیے ریسرچرز نے 4 مختلف اقسام کے پلاسٹک ٹی بیگز خریدے اور پھر ان کو کاٹ کر چائے کی پتی نکال دی اور خالی بیگز کو دھو دیا۔

اس کے بعد ٹی بیگز کو پانی میں گرم کیا گیا بالکل جیسے چائے ابلتی ہے، پھر الیکٹرون مائیکرو اسکوپ سے ریسرچ ٹیم نے دریافت کیا کہ ایک پلاسٹک ٹی بیگ سے پانی میں 11.6 ارب مائیکرو پلاسٹ اور 3.1 نانو پلاسٹک ذرات پانی میں شامل ہوتے ہیں۔

ریسرچر کے مطابق یہ تعداد دیگر غذائی اشیا کے حوالے سے سامنے آنے والی رپورٹس سے ہزاروں گنا زیادہ ہے۔ ریسرچ ٹیم نے تحقیق کا اختتام اس بات پر کیا کہ نتائج فکرمند کردینے والے ہیں مگر اس حوالے سے مزید تحقیق کی ضرورت ہے تاکہ تعین کیا جاسکے کہ انسانوں پر پلاسٹک کے اثرات کیسے ہوسکتے ہیں۔

(Visited 293 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں