نہ ہم نے این آر او مانگا نہ این آر او عمران خان سے چاہتے ہیں، ایاز صادق

Loading...

مسلم لیگ (ن) کے رہنما و سابق اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے کہا ہے کہ  میری کہی ہوئی بات کو حکومتی ارکان افواج پاکستان پر ڈال رہے ہیں اور یہ پاکستان کی خدمت نہيں۔

ہمیں میر جعفر ، میر صادق اور میر ایاز صادق جیسے لوگوں کا سامنا ہے، وزیر اعظم

اپنے بیان میں ایاز صادق کا کہنا تھا کہ علیم خان کی نااہلی ہے کہ مال روڈ پر بھارتی پرچم اور مودی کی تصاویر لگادیں، کیا ان کی حب الوطنی کسی کو نظر نہیں آرہی؟

انہوں نے کہا کہ میری کہی ہوئی بات کو حکومت افواج پاکستان پر ڈال رہی ہے جو مناسب نہیں، یہ پاکستان کی خدمت نہیں کررہے۔

ایاز صادق کاکہنا تھا کہ نہ ہم نے این آر او مانگا نہ این آر او عمران خان سے چاہتے ہیں۔

ایاز صادق محب وطن نہيں تو کوئی محب وطن نہیں: ترجمان ن لیگ

دوسری جانب مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہاکہ وزیر اعظم صاحب ہمیں دھمکیاں نہ دیں بلکہ اپنا بوریا بستر باندھنا شروع کر دیں۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی قیادت میں نیا پاکستان بننا شروع ہوگيا ہے، ایاز صادق محب وطن نہيں تو کوئی محب وطن نہیں، حکمران اداروں کے پيچھے چھپنا اور غداری کے سرٹیفکیٹ بانٹنا بند کریں، اپنی گھٹیا سیاست میں افواج پاکستان کانام استعمال کرنا بند کریں۔

Loading...

خیال رہے کہ سابق اسپیکر قومی اسمبلی اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما ایاز صادق نے گذشتہ دنوں قومی اسمبلی میں دعویٰ کیاتھاکہ حکومت نے گھٹنے ٹیک کر بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو واپس بھارت بھیجا۔

ایاز صادق کاکہنا تھاکہ میٹنگ میں وزیراعظم نے آنے سے انکار کردیا تھا مگر آرمی چیف اس میں شریک تھے، پسینے میں شرابور وزیرخارجہ شاہ محمود نے کہا تھاکہ خدا کے واسطے ابھی نندن کو واپس جانے دیں، آج رات 9 بجے بھارت حملہ کررہا ہے۔

ایاز صادق کے اس بیان کے بعد سے حکومتی رہنماؤں کی جانب سے انہیں سخت تنقید کا نشانہ بنایا جارہاہے جب کہ پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل بابر افتخار نے بھی اس بیان کےا گلے روز ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ ‘ کل ایک ایسا بیان دیا گیا جس میں تاریخ کو مسخ کرنے کی بات کی گئی۔’

انہوں نے کہا کہ ایسے منفی بیانیے کے قومی سلامتی پر براہ راست منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں، منفی بیانیہ بھارت کی شکست اور ہزیمت کو کم کرنے کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔

(Visited 25 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں