لاک ڈاؤن کے باعث کتنے فیصد خواتین ملازمتوں سے فارغ ہوئیں…..؟

Loading...

    اسلام آباد : فری اینڈ فیئر الیکشن نیٹ ورک (فافن) کے سروے کے مطابق ملک میں جاری لاک ڈاؤن کے باعث 26 فیصد خواتین ملازمتوں سے فارغ ہوئیں۔

    14 فیصد خواتین کو مستقل طور پر نکال دیا گیا جبکہ باقی خواتین ملازمین کی خدمات عارضی طور پر معطل کردی گئیں۔ جن خواتین ملازمین کو نکالا گیا ان میں فیکٹری ورکرز، سیلز پرسنز ، نجی سکولز، ہسپتالوں اور دیگر تجارتی اداروں میں کام کرنے والی خواتین شامل ہیں۔

    سروے کے مطابق ملازمت سے فارغ 15 فیصد خواتین کا تعلق سندھ اور 3 فیصد کا تعلق بلوچستان سے ہے ۔ برطرف کارکنان کی اکثریت واجبات کی منظوری کی منتظر تھیں جبکہ 28 فیصد خواتین وفاقی حکومت کے احساس پروگرام میں امداد کیلئے درخواست دے چکی ہیں۔

    loading...

    کرونا کے بارے میں ہماری سوچ دوسرے مسلم ممالک سے مختلف کیوں ….؟

    فافن نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ لاک ڈائون کے دوران ملازمین خصوصاً خواتین کی ملازمتوں کا تحفظ یقینی بنائیں۔ یہ سروے فیصل آباد ، ہری پور ، لاہور ، سیالکوٹ ، پشاور ، رحیم یار خان ، کوئٹہ اور کراچی میں 15 اور 30 اپریل 2020 کے درمیان کیا گیا۔

    پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف ڈویلپمنٹ اکنامکس کے تخمینے کے مطابق یہ وبا مزید 71 ملین افراد کو غربت کی لکیر سے نیچے دھکیل سکتی ہے اور مزید 18 ملین مزدوروں کو اپنی ملازمتوں سے ہاتھ دھونا پڑ سکتا ہے ۔

    (Visited 47 times, 1 visits today)
    Loading...
    Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں