کرونا وائرس کے مریض کو کتنے دن تک زیادہ احتیاط کرنی چاہیے ….؟

Loading...

دنیا بھر میں کرونا وائرس سے صورتحال آئے دن بدتر ہوتی چلی جارہی ہے دنیا بھر میں اب تک کرونا وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد لاکھوں تک پہنچ گئی ہے۔ وائرس سے اب تک  کروڑوں افراد متاثر ہو چکے ہیں

دنیا کے سپر پاور ملک امریکا میں متاثرین کی تعداد اب تک سب سے  زیادہ ہے اور سب سے زیادہ ہلاکتیں بھی امریکہ میں ہوئی ہیں ۔ کرونا وائرس سے بچے جوان اور بوڑھے سب ہی خوفزدہ ہیں

کرونا وائرس کے متعلق دنیا بھر کے ماہرین روز کوئی نہ کوئی نئی تحقیق کر رہے ہیں.ان ماہرین نے اپنی تحقیق میں کرونا وائرس کے متعلق مختلف طرح کے انکشافات بھی کئے ہیں.

Loading...

اب ماہرین نے ایک اور انکشاف کیا ہے کرونا وائرس کے متعلق ماہرین نے تحقیق سے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ اگر کوئی شخص کرونا وائرس میں مبتلا ہے تو وہ یہ وائرس صرف دس دن کے اندر ہی دوسروں تک منتقل پھیلا سکتا ہے. وائرس میں مبتلا ہونے کے دس دن بعد وہ یہ وائرس کسی دوسرے کو منتقل نہیں کر سکتا. اس تحقیق میں یہ کہا گیا ہے کہ جب مریض میں کرونا وائرس کی علامات ظاہر ہوتی ہیں اس کے دو پہلے اور علامات کی تاریخ سے دس دن بعد کرونا وائرس کا مریض دوسروں تک وائرس منتقل کرنے کی صلاحیت کھو دیتا ہے.

ان پیشوں سے وابستہ افراد کرونا وائرس کا جلدی شکار ہوتے ہیں ….!

اب برطانیہ امریکا اور دوسرے ممالک کو یہ ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ اگر دس روز کے بعد بھی مریض کا کرونا ٹیسٹ نیگیٹو نہیں آتا تو وہ پھر بھی اس کو ہسپتال سے ڈسچارج کر دیں. انہی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے اب بہت سے ممالک میں مریض کو دس روز بعد ہسپتال سے ڈسچارج کیا جارہا ہے.

کیونکہ ماہرین کا کہنا ہے کہ دس روز بعد مریض وائرس کیسی دوسرے تک وائرس نہیں پھیلا سکتا ٹیسٹ پوزیٹیو ہی آ رہا ہوں اور مریض کا کرنا ٹیسٹ تین ماہ تک پہنچ پاتا ہے مگر یہ وائرس آگے منتقل نہیں کر سکتا.

(Visited 19 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں