کراچی میں بارش شہریوں کیلئے مصیبت بن گئی، شاہراہیں‌ زیرآب، پانی گھروں‌ میں‌ داخل

Loading...

کراچی: کراچی میں جاری بارش شہریوں کیلئے مصیبت بن گئی، شارع فیصل، بہادر آباد، صدر، آئی آئی چندریگر روڈ پر پھر پانی جمع ہو گیا، قیوم آباد چورنگی کے قریب گھر ڈوب گئے۔

سعودی عرب سے تیل ادھار ملنےکی سہولت ایک سال کے لیے تھی، وزارت خزانہ

 بارش کے باعث کے الیکٹرک کے 174 فیڈرز  بند ہیں، مختلف مقامات پر گزشتہ روز پیدا ہونے والی فنی خرابیاں دور نہیں کی جا سکی ہیں،  بجلی کے ٹوٹے ہوئے تاروں کی مرمت نہیں کی جا سکی اور کیبل فالٹ تاحال درست نہیں کیے جا سکے ہیں۔

 موسیٰ کالونی، غریب آباد، خواجہ اجمیر نگری، گلشن حدید، ابوالحسن اصفہانی روڈ، سہراب گوٹھ، لانڈھی، پاک کالونی، سرجانی ٹاؤن، احسن آباد، ملیر، لیاقت آباد اور بلدیہ میں بھی بجلی کی فراہمی معطل ہے۔

اس حوالے سے ترجمان کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ  عملہ متاثرہ علاقوں میں بجلی کی بحالی کے لیے مصروف عمل ہے جب کہ سیفٹی کلیئرنس کے بعد بیشتر علاقوں میں بجلی بحال ہے۔

ترجمان کے الیکٹرک کا کہنا تھا کہ نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہونے کے سبب عملے کو کام میں مشکلات کا سامنا ہے، کچھ مقامات پر احتیاطی طور  پر بجلی بند کی گئی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ گلشن اقبال، بن قاسم اور  بلدیہ میں پانی کا نکاس نہ ہونے کی وجہ سے مشکلات درپیش ہیں، متعلقہ اداروں سے جلد نکاسی آب کی اپیل کی جاتی ہے۔

Loading...

واضح رہے کہ کراچی میں 3 روز کی بارش کے دوران کرنٹ لگنے سمیت مختلف حادثات میں 15 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔

آج بھی بارش کا امکان

ڈائریکٹر محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ کراچی اور بلوچستان میں بارش کا سبب بننے والا مون سون کا چوتھا سسٹم اتوار کی دوپہر تک کمزور ہونا شروع ہوگا، اتوار کو شہر میں معتدل بارشوں کا امکان ہے۔

ڈائریکٹر محکمہ موسمیات کے مطابق حالیہ سسٹم بلوچستان تک پھیل چکا ہے اور بارشوں کاسبب بن رہا ہے، گرج چمک کےساتھ بارشیں ہونےکاامکان کم ہے، بارش کا سسٹم شہر سے منتقل یا ختم ہونےکےبعد سمندری ہوائیں بحال ہوں گی۔

محکمہ موسمیات کے مطابق مون سون سسٹم آج برسنے کے بعد کمزور پڑنا شروع ہو جائے گا، لیکن کراچی میں کل بھی بوندا باندی اور ہلکی بارش کا امکان ہے۔

(Visited 13 times, 1 visits today)

Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں